سیاسی استحکام اور انتخابات میں دھاندلیوں کے خاتمے کے لئے وسیع بنیادوں پر انتخابی ..
تازہ ترین : 1

سیاسی استحکام اور انتخابات میں دھاندلیوں کے خاتمے کے لئے وسیع بنیادوں پر انتخابی اصلاحات کی جائیں،آصف زرداری ،امید ہے جو ڈیشل کمیشن کے قیام سے تنازعات اور دھرنا سیاست ختم اور پی ٹی آئی کے اراکین اسمبلیوں کو سڑکوں کی بجائے پارلیمنٹ میں کردار ادا کرنے کا موقع ملے گا،سابق صدر

کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔26 مارچ۔2015ء)پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین اور سابق صدر آصف علی زرداری نے سیاسی استحکام کے لئے اور انتخابات میں گزشتہ چھ دہائیوں سے دھاندلیوں کو ختم کرنے کے لئے مطالبہ کیا ہے کہ وسیع بنیادوں پر انتخابی اصلاحات کی جائیں ۔ سابق صدر نے اس امید کا اظہار کیا کہ جوڈیشل کمیشن کے قیام سے تنازعات اور دھرنا سیاست ختم ہو جائے گی اور پی ٹی آئی کے اراکین اسمبلیوں کو ان کا کردار سڑکوں کی بجائے پارلیمنٹ میں ادا کرنے کا موقع ملے گا۔

تاہم اس بات کی ضرورت ہے کہ انتخابات میں بد عنوانیوں کے یکسر خاتمے کے لئے تمام سیاسی پارٹیوں میں اتقاقِ رائے ہو ۔ انھوں نے تمام سیاسی پارٹیوں سے کہا کہ اس مقصد کے لئے جو بھی طریقہ اختیار کیا جائے چاہے وہ آئین میں ترمیم ہو یا نئی قانون سازی ہو کے لئے اتفاقِ رائے پیدا کریں تا کہ ایسے شفاف ، منصفانہ اور آزادانہ انتخابات ہوں جو عوام کی خواہشات کی ترجمانی کریں۔

انھوں نے یاد دلایا کہ کچھ عرصے قبل ایک کثیرالجماعتی پارلیمانی کمیٹی کا قیام عمل میں لایا گیا تھا جسے ان تمام معاملات کا جائزہ لینے کے بعد مناسب تبدیلیوں کی سفارش کرنی تھی۔ اب اس کمیٹی کو چاہیئے کہ وہ اپنا کام تیز کر دے اور اس مقصد کے لئے آئینی ترامیم اور قوانین کا مسودہ پارلیمنٹ کے سامنے پیش کرے۔ اس کے علاوہ اس پارلیمانی کمیٹی کو چاہیئے کہ وہ عوام اور دیگر شراکت داروں سے بھی تجاویز لے تا کہ انتخابات کے لئے متفقہ تجاویز اور سفارشات پیش کی جا سکیں۔

انھوں نے کہا کہ دانش پر صرف سیاسی پارٹیوں کی اجارہ داری نہیں۔ سچائی اور دانش تمام لوگوں کے درمیان اجتماعی بحث مباحثہ سے حاصل ہوتی ہے۔ تجاویز دینے اور سفارشات پیش کرنے کرنے کے عمل میں عوام اور دیگر شراکت داروں کی آراء لینا بہت ضروری ہے

وقت اشاعت : 26/03/2015 - 01:42:41

اپنی رائے کا اظہار کریں