حج 2015 کے لیے تجاویزپیش کردی گئیں،میڈیکل مشن پرتوجہ، بحری سروس شروع کی جائے، حج ..
تازہ ترین : 1

حج 2015 کے لیے تجاویزپیش کردی گئیں،میڈیکل مشن پرتوجہ، بحری سروس شروع کی جائے، حج اخراجات کم اور حج آپریشن میں تمام ایئرلائنز کوحصہ لینے کی اجازت دی جائے،حج آرگنائزروعلما نے تجاویز پیش کردیں

اسلا م آ با د(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔18 مارچ۔2015ء)حج گروپ آرگنائزرز اورعلمائے کرام نے حج2015 کے لیے تجاویزپیش کردیں۔تجاویزمیں حکومت سے مطالبہ کیاگیا ہے کہ حج اخراجات کم کیے جائیں، حج آپریشن میں تمام ایئرلائنز کوحصہ لینے کی اجازت دی جائے، سعودی عرب میں تمام سہولتوں سے آراستہ رہائش گاہیں حاصل کی جائیں، خدام الحجاج کو خصوصی تربیت دی جائے، میڈیکل مشن کی کارکردگی کو بہتر بنایا جائے۔

حج گروپ آرگنائزر حاجی محمد سعید نے کہا کہ سرکاری حج اسکیم میں ہر سال حاجیوں کو مشکلات پیش آتی ہیں، سرکاری اسکیم میں حاجیوں کا کوئی پرسان حال نہیں ہوتا، کھانا تاخیر سے ملتا ہے، حاجی دوردراز خیموں میں ہوتے ہیں، گورنمنٹ کاکیمپ بھی خاصے فاصلے پرہوتا ہے۔ انھوں نے کہاکہ حج کے 5دنوں میں سعودی عرب میں پاکستان مشن بہتر انتظامات کرے۔میڈیکل مشن پرخصوصی توجہ دی جائے، کھانے کی وقت پرفراہمی یقینی بنائی جائے، کھانے کے لیے ٹوکن سسٹم متعارف کرایا جائے،کیٹرنگ سسٹم کوبہتر کیا جائے، عازمین حج کو تربیتی نشستوں میں لفٹ اور کموڈکے استعمال کے بارے میں بتایا جائے کیونکہ سعودی عرب میں تمام ہوٹلوں میں جدید لفٹیں لگی ہیں اورکموڈسسٹم ہے۔

پاکستان کے دیہی علاقوں سے جانے والوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔حج عمرہ زیارات کمیٹی کے چیئرمین علامہ محمدعون نقوی نے کہاکہ سرکاری حج اسکیم چاہے پہلے آئیے پہلے پائیے کی بنیاد پرہو یا قرعہ اندازی کے طریقہ کارکے مطابق، اس میں بے ضابطگیاں نہیں ہونی چاہئیں۔ بعض عناصر بینکوں کے عملے کی ملی بھگت سے حقدار عازمین حج کو ان کے حق سے محروم کردیتے ہیں۔

انھوں نے کہاکہ عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں خاصی کمی ہوئی ہے لہذاحکومت کو حج پالیسی میں حج اخراجات میں کمی کا اعلان کرنا چاہیے۔گزشتہ سرکاری اسکیم میں حکومت نے اعلان کیا تھا کہ وہ سرکاری اسکیم کے حجاج کو مکہ اورمدینہ میں کھانا فراہم کرے گی لیکن گزشتہ حج کے دوران کھانے کی سروس بہتر نہیں تھی جس کی وجہ سے عازمین حج کوعبادت کے لیے جانے میں تاخیر ہوتی تھی۔

انھوں نے کہا کہ کھانے کی تقسیم مکہ اور مدینہ کی آبادی اور شہری سڑکوں اور روٹس کی وجہ سے مشکل ترین ہے۔ کھانا ہرشخص کے انفرادی مزاج کے مطابق ہونا چاہیے کیونکہ بعض اوقات کسی حاجی کو ڈاکٹرنے کھانے کا کوئی آئٹم کھانے سے منع کیا ہوتا ہے۔ لہٰذا کھانے کوسرکاری اسکیم کے پیکیج میں شامل نہ کیا جائے اور کھانے کے انتظام کا آپشن عازمین حج کو دے دیا جائے۔

انھوں نے کہا کہ عازمین حج کے لیے بلڈنگز دیکھ بھال کرلی جائیں۔بلڈنگز میں لفٹ درست ہونی چاہیے اورباتھ روم بہترہوں۔ مجلس درس پاکستان کے چیئرمین الحاج سعید صابری نے کہا کہ حج اخراجات میں کمی کی جائے، دنیا کی دیگر ایئرلائنوں کو بھی حج آپریشن میں حصہ لینے کی اجازت دی جائے، بحری سروس دوبارہ شروع کی جائے اورپہلے آئیے پہلے پائیے کے بجائے قرعہ اندازی کا طریقہ کاراپنایا جائے۔

انھوں نے کہاکہ قربانی کے لیے حاجیوں کو اجازت دی جائے کہ وہ اپنی مرضی سے قربانی کرلیں۔ انھوں نے کہاکہ حج پالیسی میں حاجیوں کے لیے کیٹیگریز نہ بنائیں۔ ممتازعالم دین علامہ نسیم احمد صدیقی نے کہا کہ حج کرائے کم کیے جائیں، بحری سروس شروع کی جائے، قرعہ اندازی کاطریقہ کاراپنایا جائے، حج اسکیم کوشفاف بنایا جائے اورسرکاری پرائیویٹ حج اسکیم کوجعلسازوں سے پاک کیا جائے۔

وقت اشاعت : 18/03/2015 - 09:21:45

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں