کمالیہ میں لڑکے اور لڑکی والوں میں جھگڑا‘ شادی ہال میدان جنگ بن گیا‘ایک دوسرے ..
تازہ ترین : 1
کمالیہ میں لڑکے اور لڑکی والوں میں جھگڑا‘ شادی ہال میدان جنگ بن گیا‘ایک ..

کمالیہ میں لڑکے اور لڑکی والوں میں جھگڑا‘ شادی ہال میدان جنگ بن گیا‘ایک دوسرے پر برتنوں سے حملے ‘ متعدد زخمی

کمالیہ(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔15 مارچ۔2015ء) مقامی شادی ہال میدان جنگ بن گیا، شادی کی تقریب میں لڑکے اور لڑکی والوں کا جھگڑا، ایک دوسرے پر برتنوں سے حملے، متعدد افراد زخمی، پولیس کے پہنچنے پر باراتی فرار، لڑکی کا نکاح موقع پر دوسرے لڑکے سے کروا دیا گیا، تفصیلات کے مطابق کمالیہ کے محلہ خورشید آباد کے رہائشی محمد ارشاد نے اپنی بیٹی کی شادی ماموں کانجن کے رہائشی نوجوان سے طے کی تھی۔

اس سلسلہ میں لاکھوں روپے کا قیمتی جہیز کا سامان پہلے ہی لڑکے والوں کے گھر بھجوا دیا گیا تھا اور رسم نکاح ایک مقامی شادی ہال میں ہونا طے پایا۔ گذشتہ روز جب لڑکے والے بارات لے کر مقامی شادی ہال پہنچے تو نکاح کے وقت حق مہر کے معاملے پر اس وقت تنازعہ کھڑا ہو گیا۔ جس پر باراتیوں اور لڑکی والوں میں معاملات شدت اختیار کر گئے اور ایک دوسرے پر شادی ہال کے ٹیبلوں پر سجے ہوئے برتنوں سے حملہ کر دیا۔

جس سے شادی ہال کے برتن ٹوٹ گئے جبکہ متعدد افراد شدید زخمی ہو گئے۔ معاملے کی شدت کو بھانپتے ہوئے شادی ہال انتظامیہ نے پولیس کو مطلع کیا۔ پولیس کے موقع پر پہنچنے پر باراتی موقع سے فرار ہو گئے۔ تاہم مذکورہ لڑکی کا نکاح محمد ارشاد نے اپنے بھانجے شعیب احمد سے موقع پر ہی کروا دیا۔ اس بارے میں رابطہ کرنے پر لڑکی کے والد محمد ارشاد کا کہنا ہے کہ ہم نے کاروائی کیلئے ڈی ایس پی کمالیہ کو تحریری درخواست دے دی اور بذریعہ پنچائیت ہو سکتا ہے کہ آج ہمیں سامان واپس مل جائے۔

وقت اشاعت : 15/03/2015 - 09:28:50

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں