آصف زرداری سے ہارس ٹریڈنگ روکنے کیلئے ایک نکاتی ایجنڈے پر بات ہوئی لیکن افسوس ..
تازہ ترین : 1
آصف زرداری سے ہارس ٹریڈنگ روکنے کیلئے ایک نکاتی ایجنڈے پر بات ہوئی ..

آصف زرداری سے ہارس ٹریڈنگ روکنے کیلئے ایک نکاتی ایجنڈے پر بات ہوئی لیکن افسوس کوشش ناکام رہی ،عمران خان ،آئینی ترمیم کے حوالے سے حکومت کبھی سنجیدہ نظر نہیں آئی ،نواز شریف اہم مرحلے پر سعودیہ جاررہے ہیں، پیپلزپارٹی اور جے یو آئی ہارس ٹریڈنگ میں مکمل طور پر ملوث ہیں ،ہم اب سینٹ الیکشن میں مصمم ارادے سے اتر کر پیسوں کے بل بوتے پر سینٹ کو خریدنے والے لوگوں کو شکست دیکر بے نقاب کرینگے ،چیئرمین پی ٹی آئی کا بیان ،سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ روکنے کیلئے 22 ویں آئینی ترمیم کا ڈرامہ عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کیلئے رچایا گیا ، وزیراعظم نواز شریف ، آصف علی زرداری اور مولانا فضل الرحمن وفاداریوں کی تجارت میں مصروف ہیں ‘ ترجمان عمران خان

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔3 مارچ۔2015ء) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے کہا ہے کہ پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری سے سینٹ الیکشن میں ہارس ٹریڈنگ روکنے کیلئے ایک نکاتی ایجنڈے پر بات ہوئی جس میں تحریک انصاف ناکام ہوگئی کیونکہ پیپلزپارٹی اور جمعیت علمائے اسلام(ف ) ہارس ٹریڈنگ میں مکمل طور پر ملوث ہیں، تحریک انصاف اب سینٹ الیکشن میں مصمم ارادے سے اتر کر پیسوں کے بل بوتے پر سینٹ کو خریدنے والے لوگوں کو شکست دیکر انہیں بے نقاب کرے گی ۔

پیر کے روز جاری ایک بیان میں عمران خان نے کہا ہے کہ تحریک انصاف نے صاف و شفاف انتخابات کا عزم لیکر سینٹ الیکشن میں اوپن بیلٹ کا مطالبہ کیا اور جب حکومت نے اس تحریک پر عملدرآمد کیلئے آل پارٹیز کانفرنس بلائی تو تحریک انصاف نے تعاون دکھاتے ہوئے اس مقصد کیلئے اپنے ر ہنماء بھیجے لیکن اس سے یہ ثابت ہوگیا کہ حکومت ہارس ٹریڈنگ کے خاتمے کیلئے آئینی ترمیم لانے کے ارادے میں کبھی بھی سنجیدہ نہیں تھی اور یہ بات بھی اس چیز کی عکاس ہے کہ نواز شریف اب اس اہم موقع پر سعودی عرب کا دورہ کرنے جارہے ہیں ۔

عمران خان نے افسوس کا اظہار کیا کہ سینٹ الیکشن میں ہارس ٹریڈنگ کو روکنے اور اس کی مخالفت کیلئے پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری کو قائل کرنے کی ان کی کوشش ناکام رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے اوپن بیلٹ کی تجویز کو مسترد کیا کیونکہ وہ اور جے یو آئی (ف) مکمل طور پر ہارس ٹریڈنگ میں ملوث ہیں ۔ عمران خان نے واضح کرتے ہوئے کہاکہ تحریک انصاف نے سینٹ الیکشن کے حوالے سے کسی بھی جماعت سے کوئی معاہدہ کیا ہے اور نہ ہی کبھی ایسا ہوسکتا ہے ۔

عمران خان نے اس عزم کو بھی دوہرایا کہ وہ بذات خود کے پی کی سینٹ کی نشستوں پر تحریک انصاف کے صاف اور شفاف انتخابات کی نگرانی کریں گے اور ہارس ٹریڈنگ میں ملوث افراد کو بے نقاب کریں گے۔ عمران خان نے کہا کہ مسلم لیگ(ن) اور پیپلزپارٹی کی نیت کو دیکھتے ہوئے اب تحریک انصاف سینٹ الیکشن میں مصمم ارادے سے اترے گی اور ایسے لوگوں کو ہراکر بے نقابکرے گی جوکہ سینٹ میں پیسوں کے بل بوتے پر خر ید کر آنا چاہتے ہیں۔

ادھرتحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے ترجمان عمر سرفراز چیمہ نے کہا ہے کہ سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ روکنے کیلئے 22 ویں آئینی ترمیم کا ڈرامہ عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کیلئے رچایا گیا ، وزیراعظم نواز شریف ، آصف علی زرداری اور مولانا فضل الرحمن وفاداریوں کی تجارت میں مصروف ہیں ۔ پیر کو اپنے ایک بیان میں ترجمان عمران خان نے کہا کہ (ن) لیگ ، پیپلزپارٹی اور جے یو آئی (ف) انتخابات میں شفافیت کی خواہش مند نہیں ،ہارس ٹریڈنگ روکنے کیلئے روایتی جماعتوں کی بدنیتی کھل کر سامنے آگئی ، تینوں جماعتیں ہارس ٹریڈنگ کی محافظ بن گئی ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ اگر آئندہ انتخابات شفاف ہوئے تو تینوں پارٹیوں کا صفایا ہو جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف انتخابات کی شفافیت پر یقین رکھتی ہے ۔

وقت اشاعت : 03/03/2015 - 09:00:29

اپنی رائے کا اظہار کریں