منشیات کے سدِ باب اور خاتمے کے لئے پاکستان کی جانب سے کئے گئے اقدامات اور اس سلسلے ..
تازہ ترین : 1

منشیات کے سدِ باب اور خاتمے کے لئے پاکستان کی جانب سے کئے گئے اقدامات اور اس سلسلے میں پاکستان کی حاصل کردہ کامیابی اہمیت کی حامل ہے، بلیغ الرحمٰن ، بین الاقوامی برادری کے شانہ بشانہ انسدادِ منشیات کے لئے جاری جنگ میں پاکستان کے عزم کو سراہاجانا چاہیے،سمینار سے خطاب

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارآن لائن۔28جنوری۔2015ء) وفاقی وزیرِ مملکت برائے داخلہ و انسدادِ منشیات بلیغ الرحمٰن نے کہاہے کہ منشیات کے سدِ باب اور خاتمے کے لئے پاکستان کی جانب سے کئے گئے اقدامات اور اس سلسلے میں پاکستان کی حاصل کردہ کامیابی اہمیت کی حامل ہے ، بین الاقوامی برادری کے شانہ بشانہ انسدادِ منشیات کے لئے جاری جنگ میں پاکستان کے عزم کو سراہاجانا چاہیے ۔

ان خیالات کا اظہا رانہوں نے انسداد منشیات کے موضوع پر علاقائی سیمیناربرائے اے این ایف اور عالمی ادارہ برائے انسداد منشیات وجرائم کی مشترکہ کاوش سے خطاب کے دوران کیا ۔ اس موقع پر فاقی وزیرِ مملکت برائے صحت سائرہ افضل تارڑ ، سیکرٹری انسدادِ منشیات ڈویژن غالب علی بندیشہ ، پاکستان میں تعینات UNODC کے اعلیٰ ترین نمائندے سیزر گیوڈیز ، سابق آئی جی سعود مرزا، ڈی جی اے این ایف میجر جنرل خاور حنیف، بریگیڈیر ریٹائرڈ مودت رانا اور سینئیر صحافی سید طلعت حسین نے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

انسدادِ منشیات کے موضوع پر قومی اہمیت کا حامل علاقائی سیمینار اے این ایف اورعالمی ادارہ برائے انسدادِ منشیات وجرائم (UNODC) کے مشترکہ تعاون سے مقامی ہوٹل اسلام آباد میں منعقد ہوا۔ سیمینار علاقائی سطح پر ہونے والی اسملگلنگ کی گذر گاہوں اور ان کے قریب واقع متاثرہ ممالک کے مسائل پر اپنی نوعیت کا پہلا سیمینار ہے، جس کا مقصد منشیات کی اسمگلنگ کے نتیجے میں جنم لینے والی خرابیوں اور معاشرے پر رونما ہونے والے مضر رساں اثرات کی نشاندہی اور وضاحت کرنا تھا جن میں سے ایک سنگین مسئلہ اسمگلنگ کی گذر گاہوں کے قریبی خطے میں واقع ممالک کا متاثر ہونا ہے۔

اس موقع پر خطے میں منشیات کے پھیلاؤ کے خطرات ، اس کے اسباب اور سدِ باب ، UNODCکی مدد سے انسدادِ منشیات میں کردار ادا کرنے والے اداروں کی استعداد بڑھانا ، انسداد منشیات کے لئے کئے گئے اقدامات کو مزید فعال بنانا ، آگاہی بیدار کرنے میں ذرائع ابلاغ کا کردار ، منشیات کے استعمال کے نقصان دہ نتائج اور ان کا علاج اور منشیات کے عادی افراد کے نفسیاتی مسائل پرسب سے زیادہ زور دیا گیا۔

پاکستان میں تعینات UNODC کے اعلیٰ ترین نمائندے سیزر گیوڈیز نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے انسدادِ منشیات کے لئے کردار ادا کرنے والے قانون نافذ کرنے والے اداروں کی استعداد بڑھانے اور عالمی سطح پر تعاون بڑھانے کے عزم کا اعادہ کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ منشیات کی روک تھام ایک مشترکہ ذمہ داری ہے اور UNODC بحیثیتِ عالمی ادارے کے اپنا مرکزی کردار ادا کرتا رہے گا۔

ڈی جی اے این ایف میجر جنرل خاور حنیف نے منشیات کے سدِ باب کے لئے نفاذِ قانون اور اس کی طلب و رسد کے خاتمے کے لئے کئے گئے پاکستان کے عملی اقدامات اور اس کے والہانہ عزم کو سراہا۔انہوں نے عالمی اور علاقائی سطح پر بین الاقوامی رفقاء کی طرف سے منشیات کی اسمگلنگ کے خاتمے کے لئے کی گئی کاوشوں کی تعریف کی۔توقع کی جاتی ہے کہ اس سیمینار سے منشیات سے متعلقہ مسائل کے مثبت ادراک اور علاقائی رابطوں کی راہ ہموارہو گی، اور عالمی سطح پر تعاون بڑھانے کے لئے حالیہ سیمینار نہایت سود مند ثابت ہو گا۔

وقت اشاعت : 28/01/2015 - 09:02:37

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں