میں ڈیفالٹرہوں اورنہ ہی میں نے قرض لیا ہوا ہے،فہمیدہ مرزا
تازہ ترین : 1

میں ڈیفالٹرہوں اورنہ ہی میں نے قرض لیا ہوا ہے،فہمیدہ مرزا

جوجرم ہوا ہی نہیں اسےبارباردہرایا جا رہا ہے،چیف جسٹس سے اپیل کرتی ہوں کہ میرے کیس کو دیکھا جائے۔سابق اسپیکرقومی اسمبلی فہمیدہ مرزا کا مطالبہ

میں ڈیفالٹرہوں اورنہ ہی میں نے قرض لیا ہوا ہے،فہمیدہ مرزا
بدین(اُردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔14 جون 2018ء) : پاکستان پیپلزپارٹی کی منحرف رہنماء اور سابق اسپیکر قومی اسمبلی فہمیدہ مرزا نے بینک نادہندہ ہونے کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں ڈیفالٹر ہوں اور نہ ہی میں نے قرض لیا ہوا ہے،جوجرم ہوا ہی نہیں اسے بارباردہرایا جا رہا ہے،،چیف جسٹس سے اپیل کرتی ہوں کہ میرے کیس کو دیکھا جائے۔ انہوں نے آج یہاں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مجھے خوشی ہوتی ہے کہ مخالفین کو میرے خلاف کچھ بھی نہیں ملا۔

آر اونے آج میری پٹیشن کودیکھا۔ میں سمجھتی ہوں کہ میں آج ایک مافیا سے لڑ رہی ہوں۔ انہوں نے کہا کہ جوجرم ہوا ہی نہیں اسے بارباردہرایا جا رہا ہے۔ میں عوام کے لئے لڑرہی ہوں۔ چیف جسٹس سے اپیل کرتی ہوں کہ میرے کیس کو دیکھا جائے۔ انہوں نے کہاکہ عوام الیکشن کمیشن اور میری طرف دیکھ رہے ہیں۔ مافیانے سندھ کے ساتھ ظلم کیا، مافیا کے بے تحاشا کرپشن کیسز ہیں۔

فہمیدا مرزا نے مزید کہا کہ میرے کاغذات پر18جون کو فیصلہ سنایا جائے گاجس پر مجھے شکوک وشبہات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں ڈیفالٹر ہوں اور نہ ہی میں نے قرض لیا ہوا ہے۔ میں نے کوئی لون معاف نہیں کرایا ہے۔ واضح رہے اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے عام انتخابات 2018ء کیلئے کاغذات نامزدگی جمع کروانے والے امیدواروں کی فہرست الیکشن کمیشن کو بھجوائی۔

الیکشن کمیشن کی جانب سے بھجوائی گئی فہرست میں 277 امیدوارنادہندہ قرار پائے ہیں۔ ان امیدواروں میں پیپلزپارٹی کی سابق اسپیکر قومی اسمبلی فہمیدہ مرزا بھی شامل ہیں۔ فہمیدہ مرزا نے عام انتخابات 2018ء کیلئے پیرپگاڑا کے گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کے پلیٹ فورم سے کاغذات نامزدگی جمع کروائے ہیں۔ اسٹیٹ بینک کی فہرست کے مطابق فہمیدہ مرزا کے ذمے بینکو ں کے 276 ملین واجب الاادا ہیں۔

فہمیدہ مرزا نے اپنی شوگر ملز کیلئے504 ملین روپے کے قرضے معاف کروائے ہیں۔اسی طرح مزید نادہندگان میں نوازش علی 10ملین اور مختاراحمد خان 307 ملین کے بینک ڈیفالٹرزہیں۔ جبکہ غلام مصطفی میرانی 2ملین روپے، غلام دستگیر74ملین، کنیز فاطمہ 2ملین روپے اور نیلم ارشاد 46 ملین کی نادہندہ نکلی ہیں۔ الیکشن کمیشن نادہندگان کے الیکشن لڑنے پرپابندی عائد کرسکتا ہے۔

واضح رہے پیپلزپارٹی کی سابق اسپیکر قومی اسمبلی فہمیدہ مرزا اور ان کے شوہر سابق وزیرداخلہ سندھ ذوالفقار مرزا نے پیپلزپارٹی کے قیادت کے ساتھ شدید تحفظات رکھنے کی بنیاد پراپنی راہیں جدا کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ پیپلزپارٹی عوام کی ترجمانی کرنے والی پیپلزپارٹی نہیں ہے۔ انہوں نے پیرپگاڑا کے جی ڈی اے الائنس سے الیکشن لڑنے کیلئے بدین میں انتخابی حلقہ سے کاغذات نامزدگی جمع کروا رکھے ہیں۔

مزید برآں الیکشن کمیشن آف پاکستان میں ملک بھرسے21 ہزار482 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے۔ جس میں قومی اسمبلی کی نشستوں کیلئے5ہزار473 کاغذات نامزدگی موصول ہوئے۔ بلوچستان اسمبلی کیلئے1400، خیبرپختونخواہ اسمبلی کیلئے 1920 کاغذات نامزدگی موصول ہوئے۔ پنجاب اسمبلی کیلئے6 ہزار 747 امیدواروں اور سندھ اسمبلی کیلئے 3 ہزار 626 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے۔

اسی طرح صوبائی اسمبلیوں کی جنرل نشستوں کیلئے 13ہزار 693 کاغذات نامزدگی جمع کیے گئے ہیں۔ الیکشن کمیشن نے مزید بتایا کہ قومی اسمبلی اسمبلی میں خواتین کی مخصوص نشستوں کیلئے436 کاغذات نامزدگی موصول ہوئے۔ صوبائی اسمبلیوں میں خواتین کی مخصوص نشستوں کیلئے ایک ہزار 255 کاغذات موصول ہوئے۔ اسی طرح قومی اسمبلی میں اقلیتوں کی مخصوص نشستوں کیلئے154 اورصوبائی اسمبلیوں میں اقلیتی مخصوص نشستوں کیلئے 471 کاغذات نامزدگی موصول ہوئے ہیں۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 14/06/2018 - 17:49:41

اس خبر پر آپ کی رائے‎