سپریم کورٹ نے انتخابی امیدواروں کو دیواروں پر تشہیری مہم چلانے سے روک دیا
تازہ ترین : 1

سپریم کورٹ نے انتخابی امیدواروں کو دیواروں پر تشہیری مہم چلانے سے روک دیا

بینر اور پوسٹرز لگنے چاہئیں تاکہ لوگوں کو امیدوار کا پتا چل سکے، عدلیہ اور الیکشن کمیشن پر ایک ہی ذمہ داری باقی رہ گئی ہے، اللہ خیر رکھے الیکشن کی ذمہ داری نبھا سکیں،جسٹس ثاقب نثار کے ریمارکس

لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 جون2018ء) سپریم کورٹ نے انتخابی امیدواروں کو دیواروں پر تشہیری مہم چلانے سے روک دیا،جسٹس ثاقب نثار نے دیئے بینر اور پوسٹرز لگنے چاہئیں تاکہ لوگوں کو امیدوار کا پتا چل سکے، عدلیہ اور الیکشن کمیشن پر ایک ہی ذمہ داری باقی رہ گئی ہے، اللہ خیر رکھے الیکشن کی ذمہ داری نبھا سکیں۔ بدھ کو چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی جس دوران عدالت نے امیدواروں کو دیواروں پر تشہیری مہم چلانے سے روک دیا۔

اس موقع پر چیف جسٹس پاکستان نے حکم دیا کہ الیکشن کمیشن ضابطہ اخلاق پر سختی سے عملدرآمد کرائے اور کمیشن ضابطہ اخلاق سے متعلق تشہیری مہم میڈیا پر چلائے۔جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ بینر اور پوسٹرز لگنے چاہئیں تاکہ لوگوں کو امیدوار کا پتا چل سکے، عدلیہ اور الیکشن کمیشن پر ایک ہی ذمہ داری باقی رہ گئی ہے، اللہ خیر رکھے الیکشن کی ذمہ داری نبھا سکیں۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 13/06/2018 - 16:17:46

اس خبر پر آپ کی رائے‎