اسلام آباد، عمران خان کی صدارت میں تحریک انصاف کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس
تازہ ترین : 1

اسلام آباد، عمران خان کی صدارت میں تحریک انصاف کی پارلیمانی پارٹی کا اجلاس

فاٹا کے پختونخوا میں مکمل انضمام کیلئے آئینی ترمیم کی فوری منظوری کا مطالبہ وفاقی حکومت نے اپنے سیاسی حریفوں کو خوش کرنے کے لئے فاٹا کے انضمام کے عمل کو تعطل کا شکار کیا ہے،ترجما ن

اسلام آباد، عمران خان کی صدارت میں تحریک انصاف کی پارلیمانی پارٹی کا ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 مئی2018ء) تحریک انصاف کی پارلیمانی پارٹی کا اہم اجلاس چیئرمین عمران خان کی صدارت میں منعقد ہوا جس میں فاٹا کے پختونخوا میں مکمل انضمام کیلئے آئینی ترمیم کی فوری منظوری کا مطالبہ کیا گیا۔ اجلاس کے حوالے سے تحریک انصاف کے ترجمان نے کہا ہے کہ فاٹا اصلاحات اور خیبرپختونخوامیں فاٹاکاانضمام تحریک انصاف کے منشور کا اہم جزو ہے۔

وفاقی حکومت نے اپنے سیاسی حریفوں کو خوش کرنے کے لئے فاٹا کے انضمام کے عمل کو تعطل کا شکار کیا ہے۔ ترجمان نے یہ بھی بتایا ہے کہ تحریک انصاف نے 2016 میں فاٹا کے پختونخوا میں انضمام کی تجویز دی تھی۔۔تحریک انصاف کی تجویز پر عملدرآمد کرتے ہوئے فاٹاکو پختونخوا کا حصہ بنا دیا جاتا تو ملک آج مستحکم ہوتا۔ انہوں نے مزید کہا کہ آج فاٹا میں بہت بڑے سیکورٹی چیلنجز کا سامنا ہے۔

پختون عوام نے جو نقصان اٹھایا اس کی بڑی ذمہ داری نواز شریف،، فضل الرحمن اور محمود اچکزئی جیسے لوگوں پر عائد ہوتی ہے۔ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ فاٹا کے پختونخوا میں انضمام کے عمل میں ہونے والے تاخیر سے فاٹا کے عوام میں بے چینی پائی جاتی ہے۔ تحریک انصاف مجوزہ آئینی ترمیم میں اصلاح تجویز پیش کرے گی۔۔تحریک انصاف فاٹا کے پختونخوا میں مکمل انضمام کا مطالبہ کرے گی کیونکہ فاٹا کے پختونخوا میں انضمام ہی سے قبائلی عوام انتظامی اور معاشی طور پر بااختیار ہوں گے۔

پارلیمانی پارٹی کا مطالبہ ہے کہ آئینی ترمیم فوری طور پر منظور کی جائے۔ آئینی ترمیم کی منظوری سے فاٹا کو پختہ فوری طور پر پختونخوا کا حصہ بنایا جائے۔۔فاٹا کے پختونخوا میں انضمام کے عمل کو مزید کسی تعطل کا شکار بنانے سے گریز کیا جائے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 17/05/2018 - 21:37:36

اس خبر پر آپ کی رائے‎