مشرق وسطیٰ امن و امان کی خرابی کا ذمہ دار اسرائیل ہے ‘ اقوام متحدہ مقبوضہ بیت المقدس ..
تازہ ترین : 1

مشرق وسطیٰ امن و امان کی خرابی کا ذمہ دار اسرائیل ہے ‘ اقوام متحدہ مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی دہشت گردی کی تحقیقات کرے۔پاکستان

عالمی عدالت انصاف نے فلسطین میں اسرائیلی فوج کے وحشیانہ حملوں میں نہتے شہریوں کے قتل عام کی آزادانہ تحقیقات کی یقین دہانی کرادی

مشرق وسطیٰ امن و امان کی خرابی کا ذمہ دار اسرائیل ہے ‘ اقوام متحدہ مقبوضہ ..
 واشنگٹن(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔16 مئی۔2018ء) اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی نے کہا ہے کہ مشرق وسطیٰ امن و امان کی خرابی کا ذمہ دار اسرائیل ہے اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ملیحہ لودھی نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں کہا ہے کہ پاکستان امریکی سفارت خانے کی تل ابیب سے بیت المقدس منتقلی اور مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی دہشت گردی کی مذمت کرتا ہے۔

انہوں نے کہاکہ اسرائیل کی وجہ سے مشرق وسطیٰ میں امن قائم نہیں ہوسکا، اقوام متحدہ مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی دہشت گردی کی تحقیقات کرے۔ملیحہ لودھی کا اپنے ویڈیو بیان میں مزیدکہا کہ صیہونی ریاست اسرائیل کی دفاعی افواج نے نہتے فلسطینی بزرگ، خواتین اور بچوں کو یہاں تک کہ معذرو افراد کو بھی گولیوں کا نشانہ بنایا، جو انتہائی المناک ہے۔

ادھرعالمی عدالت انصاف نے فلسطین کے علاقے غزہ میں ”یوم نکبہ“ کے موقع پر اسرائیلی فوج کے وحشیانہ حملوں میں نہتے شہریوں کے قتل عام کی آزادانہ تحقیقات کی یقین دہانی کرائی ہے۔عرب نشریاتی ادارے کے مطابق عالمی عدالت انصاف کی پراسیکیوٹر جنرل فاتو بنسوڈا نے ایک بیان میں کہا کہ وہ غزہ میں جاری بے چینی پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں۔ اس حوالے سے تمام ضروری اقدامات کیے جائیں گے اور جرائم میں ملوث اسرائیلی عہدیداروں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمارے اہلکار غزہ میں فیلڈ کی صورت حال کا جائزہ لے رہے ہیں۔ ہم دیکھ رہے ہیں کہ عالمی عدالت انصاف کے دائرہ اختیار میں آنے والے کسی بھی جرم کی تحقیقات کے لیے کیا لائحہ عمل اختیار کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ تشدد کاسلسلہ بند ہونا چاہیے، تمام فریقین کو تحمل کا مظاہرہ کرتے ہوئے خون خرابے سے بچنے کی پالیسی اختیار کرنا ہو گی۔

بنسوڈا نے کہا کہ اسرائیلی فوج فلسطینی مظاہرین کے خلاف طاقت کا اندھا دھند استعمال کررہی ہے جس کا کوئی جواز نہیں۔خیال رہے کہ غزہ کی مشرقی سرحد پر اپنے حق واپسی کے لیے احتجاج کرنے والے فلسطینیوں پر اسرائیلی فوج نے اندھا دھند شیلنگ اور فائرنگ سے 61 فلسطینی شہری شہید اور تین ہزار سے زائد زخمی ہو گئے تھے۔ غزہ میں 2014 کی جنگ کے بعد ایک ہی روز میں شہریوں کے قتل عام کا یہ سب سے بڑا واقعہ ہے.

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 16/05/2018 - 13:20:23

اس خبر پر آپ کی رائے‎