نواز شریف کو ممبئی حملوں سے متعلق متنازعہ بیان دینے کی ضرورت کیوں آن پڑی تھی ؟
تازہ ترین : 1

نواز شریف کو ممبئی حملوں سے متعلق متنازعہ بیان دینے کی ضرورت کیوں آن پڑی تھی ؟

سینئیر تجزیہ کار نے نواز شریف کے بیان کو غیر ذمہ دارانہ قرار دے دیا

نواز شریف کو ممبئی حملوں سے متعلق متنازعہ بیان دینے کی ضرورت کیوں آن ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 15 مئی 2018ء) ::نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے سینئیر تجزیہ کار مظہر عباس نے کہا کہ سوال یہ تھا ہی نہیں ، جس کا جواب نواز شریف نے یہ دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تاریخ کے حوالے سے باتیں ہو سکتی ہیں، پراکسی کے حوالے سے بھی بہت سی باتیں ہو سکتی ہیں، لیکن ایک شخص جو سابق وزیر اعظم ہو اور جو تین مرتبہ وزیر اعظم رہے ہوں ان سے ایسے بیان کی توقع نہیں کرنی چاہئیے کہ وہ اس طرح کا بیان دیں گے۔

مظہر عباس نے کہا کہ سابق وزیر اعظم نواز شریف کو یہ بیان بالکل نہیں دینا چاہئیے تھا ، ان کا یہ بیان انتہائی غیر ذمہ دارانہ بیان تھا۔ انہوں نے کہا کہ یہاں تک کہ 2008 میں جو پاکستان نے جو پوزیشن لی تھی اور اس کے بعد جو صورتحال ہوئی تھی ، میں نے خود جنرل درانی کا انٹرویو تھا ، اس وقت بھی دو رائے تھیں کہ شاید ہم نے جو پوزیشن لی تھی ہمیں نہیں لینی چاہئیے تھی ، نواز شریف جو بات کر رہے ہیں وہ باتیں حقائق کے منافی ہیں، اس لیے حقائق سے منافی ہیں کیونکہ وہ جو ٹرائل کی بات کر رہے ہیں،تو اس مقدمے کے ٹرائل میں تاخیر کے ذمہ دار ہم نہیں ہیں، ان کے پاس پچھلے چار سال کا ریکارڈہو گا کہ اس مقدمے میں کیا کیا پیش رفت ہوئی ہے۔

دوسری بات انہوں نے نان اسٹیٹ ایکٹرز کی بات کی ۔ 2014ء میں جب آل پارٹیز کانفرنس ہوئی تھی اور نیشنل ایکشن پہلان بنا تھا تو اس وقت اگر پلان پر صحیح معنوں میں عملدرآمد ہوتا تو شاید ان کو بہت سے سوالات کے جوابات مل جاتے ۔ نواز شریف کے بیان پر اس کے ساتھ ہی جو رد عمل آ رہا ہے ، جب کوئی تباہی آتی ہے تو آپ کو چاہئیے کہ آپ اس تباہی کو کنٹرول کریں نہ کریں اس تباہی میں حصہ ڈالیں۔

میں تمام لوگوں سے بشمول عمران خان سے کہوں گا کہ آئین آرٹیکل 6 ایک مخصوص آرٹیکل ہے ،ہر چیز اس آرٹیکل کے زمرے میں نہیں آتی۔دوسری اہم بات یہ ہے کہ ہمیں اس صورتحال کو کنٹرول کرنا چاہئیے کیونکہ اس سے ہمیں بین الاقوامی س طح ہپر شرمندگی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ نیشنل سکیورٹی کونسل کا ایک واضح بیان آ گیا انہوں نے مذمت کر دی،،مسلم لیگ ن خود بھی بے تحاشا کنفیوژن کا شکار ہے، نہ چاہتے ہوئے بھی ایک دوسرے کو متنازعہ بنایا جا رہا ہے۔ بین الاقوامی سطح پر اس بیان سے متعلق ہم جو بھی یہاں کریں گے اس کا اثر پڑے گا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 15/05/2018 - 11:17:28

اس خبر پر آپ کی رائے‎