معروف صحافی نے جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ سے متعلق نئے انکشافات کر دئیے
تازہ ترین : 1

معروف صحافی نے جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ سے متعلق نئے انکشافات کر دئیے

معروف صحافی نے جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ سے متعلق نئے انکشافات ..
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔16اپریل 2018ء)معروف صحافی حامد میر کا کہنا ہے کہ  جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ کا واقعہ اتفاقیہ نہیں ہے۔ تفصیلات کے مطابق گزشتہ روز جسٹس اعجاز الاحسن کے گھر پر فائرنگ کا واقعہ پیش آیا جس کے بعد میڈیا میں ایک نئی بحث چھڑ گئی۔اسی کے اوپر تبصرہ کرتے ہوئے سینئیر صحافی حامد میر کا کہنا تھا کہ میں سیدھی اور صاف بات کروں گا مجھے یہ کوئی اتفاقیہ واقعہ نہیں لگتا۔

اور بہت سوچ سمجھ کر ایک بار نہیں دو بارفائرنگ کی گئی۔جس جگہ پر یہ واقعہ ہوا وہاں میرا بچپن گزارا اس لیے میں اس جگہ کو بہت اچھی طرح جانتا ہوں۔اور جسٹس اعجاز الاحسن کا گھر وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کے گھر سے تھوڑا سا فاصلےپر ہے۔اور ان کے گھرکی طرف جو دو راستے جاتے ہیں وہاں پر نہ صرف پنجاب پولیس بلکہ رینجرز بھی تعینات ہے۔اور کیمرے بھی لگے ہوئے ہیں۔

اور جو 9ایم ایم کی گولی ہوتی ہے وہ اتنی دور سے نہیں چلائی جاتی بلکہ 9 ایم ایم کے پستول سے جو گولی نکلتی ہے وہ بہت قریب سے ہی چلتی ہے۔اور وقفے وقفے سے دو بار فائرنگ کی گئی جس سے جسٹس اعجاز الاحسن کو ایک پیغام دیا گیا۔حامد میر کا کہنا تھا کہ فائرنگ کرنے والے کوئی ثبوت بھی چھوڑ کر نہیں گئے۔مجھے یہ نہیں پتہ کہ یہ فائرنگ کس نے کروائی تا ہم میں اتنا ضرور کہوں گا کہ فائرنگ کی یہ ورادات کر کے سپریم کورٹ، ہائی کورٹ اور نیب کورٹ کے تمام ججوں کے لیے ایک پیغام ہے۔حامد میر نے مزید کیا کہا ویڈیو میں ملاحظہ کیجئے:
وقت اشاعت : 16/04/2018 - 11:07:20

اس خبر پر آپ کی رائے‎