سابق صدر پرویز مشرف کی سیاست اور غلط فیصلوں نے پاکستان کو کتنا نقصان پہنچایا؟
تازہ ترین : 1

سابق صدر پرویز مشرف کی سیاست اور غلط فیصلوں نے پاکستان کو کتنا نقصان پہنچایا؟

سابق صدر پرویز مشرف کی سیاست اور غلط فیصلوں  نے پاکستان کو کتنا نقصان ..
لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔22مارچ 2018ء)معروف صحافی حامد میر نے سابق صدرجنرل پرویز مشرف کی سیاست اور ان کے غلط فیصلوں کے نتیجے میں پاکستان کو ہونے والے نقصانات سے متعلق بتا دیا۔ تفصیلات کے مطابق معروف صحافی و کالم نگار حامد میر سابق صدر پرویز مشرف کی سیاست سے متعلق اپنے ایک کالم ’’لو وہ پھرآ رہے ہیں‘‘ میں لکھتے ہیں کہ سابق صدر پرویز مشرف نے اقتدار میں آنے کے بعد امریکہ کے ساتھ معاملات طے کرنا شروع کردیئے۔

پرویز مشرف نے کور کمانڈرز کو بتائے بغیر جیکب آباد ایئربیس امریکہ کے حوالے کیا تو فوج کو احساس ہوا کہ مشرف خودراہ ِراست سے ہٹ گئے ہیں۔ پھرانہو ں نے عراق کی جنگ میں فوج کو جھونکنے کی کوشش کی تو ان کے ساتھیوں کی طرف سے مزاحمت ہوئی۔پرویز مشرف اسرائیل کو تسلیم کرنا چاہتے تھے لیکن فوجی قیادت نہیں مانی۔ انہو ں نے بھارتی وزیراعظم من موہن سنگھ کے ساتھ مل کر مسئلہ کشمیر کا ایک ایسا حل تلاش کیا جو کشمیریوں کی پیٹھ میں خنجر گھونپنے کے مترادف تھا۔

مشرف صاحب کی کنٹرولڈ ڈیموکریسی میں نواب اکبر بگٹی کے قتل کے بعد جوکچھ ہوا اس سے پاکستان کو بہت نقصان ہوا۔ لال مسجد میں آپریشن کےنام پر جو ڈرامہ ہوااس کےبعد ملک بھرمیں خودکش حملے ہونے لگے۔ 12مئی 2007کو کراچی میں ایم کیو ایم کے ذریعے جو قتل عام ہوا اس کے بعد مشرف ایک انتہائی متنازع شخصیت بن گئے اور ان کی وجہ سے پاکستان آرمی کی ساکھ کوشدید نقصان پہنچا۔ سول ملٹری تعلقات میں جو بگاڑ مشرف نے پیدا کیا وہ اور کسی دوسرے نے پیدا نہیں کیا۔
اس خبر نوں پنجابی وچ پڑھو
وقت اشاعت : 22/03/2018 - 13:44:16

اس خبر پر آپ کی رائے‎