لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی سائیکالوجی ڈیپارٹمنٹ کی سربراہ کی تعیناتی ..
تازہ ترین : 1

لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی سائیکالوجی ڈیپارٹمنٹ کی سربراہ کی تعیناتی کے خلاف دائر درخواست نمٹا دی

لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی سائیکالوجی ڈیپارٹمنٹ کی سربراہ ..
لاہور۔14 مارچ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 مارچ2018ء) لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد مبین نے پنجاب یونیورسٹی سائیکالوجی ڈیپارٹمنٹ کی سربراہ ڈاکٹر فرح ملک کی تعیناتی کے خلاف دائر درخواست نمٹاتے ہوئے درخواست گزار کو متعلقہ فورم سے رجوع کرنے کی ہدائت کر دی،درخواست گزارڈاکٹر رافع رفیق کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر نے قوانین اور قواعد کو نظر انداز کرتے ہوئے ڈاکٹر فرح ملک کو پنجاب یونیورسٹی سائیکالوجی ڈیپارٹمنٹ کی سربراہ مقرر کر دیا، انہوں نے کہا ڈاکٹر فرح ملک کی تعیناتی سے قبل سینڈیکیٹ کی منظوری بھی حاصل نہیں کی گئی، پنجاب یونیورسٹی کے قانونی مشیر ملک اویس خالد نے عدالت کو بتایا کہ ڈاکٹر فرح ملک 2013ء میں ’’ ٹنیور ٹریک‘‘ سسٹم کے تحت پروفیسر کے عہدے پر تعینات ہوئیں،انہوں نے کہا کہ درخواست گزار نے چار برس بعد بدنیتی پر مبنی درخواست دی جس کا کوئی قانونی جواز نہیںجس پر عدالت نے درخواست گزار سے استفسار کیا کہ اتنا عرصہ گزرنے کے بعد درخواست دائر کرنے کا خیال کیسے آیا،عدالت نے درخواست نمٹاتے ہوئے درخواست گزار کو متعلقہ فورم سے رجوع کرنے کی ہدایت کر دی۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 14/03/2018 - 14:44:12

اس خبر پر آپ کی رائے‎