وزیر داخلہ سندھ کی زیر صدارت اجلاس، اسٹریٹ کرائمزکی روک تھام کیلئے اقدامات پر ..
تازہ ترین : 1

وزیر داخلہ سندھ کی زیر صدارت اجلاس، اسٹریٹ کرائمزکی روک تھام کیلئے اقدامات پر غور

وزیر داخلہ سندھ کی زیر صدارت اجلاس، اسٹریٹ کرائمزکی روک تھام کیلئے ..
کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 فروری2018ء) وزیرداخلہ سندھ سہیل انور خان سیال کی زیر صدارت ایک اجلاس کے دوران شہر میں اسٹریٹ کرائمز اور باالخصوص موبائل فونز اسنیچنگ/چوری/اسمگلنگ اور ایسے موبائل کی خرید وفروخت جیسے اقدامات کی روک تھام کا مختلف حوالوں سے تفصیلی جائزہ لیا گیا اور ضروری احکامات دیئے گئے۔ اجلاس میں ڈائریکٹر پی ٹی اے سید اخلاق حسین شاہ,ڈپٹی سیکریٹری داخلہ سندھ,محکمہ داخلہ سندھ کے دیگر افسران نے بھی شرکت کی۔

اجلاس کو دوران بریفنگ ڈائریکٹر پی ٹی اے نے بتایا کہ اسنیچ اور چوری شدہ موبائل فونز کے ساتھ ساتھ اسمگل شدہ موبائل فونز کی روک تھام اور باالخصوص جرائم کی مختلف نوعیت کی وارداتوں میں انکے ممکنہ استعمال کے انسداد کے حوالے سے پی ٹی اے نے ایک مربوط اور مؤثر لائحہ عمل ترتیب دے دیا ہے جس کے تحت پہلے مرحلے میں 140 ملین موبائل فون استعمال کرنیوالے صارفین کے سم کارڈز اور کمپیوٹرائزڈ شناختی کارڈز نمبرز کا پیئرنگ/ میپنگ ڈیٹا تیار کیا جا رہا ہے جوکہ بعد ازاں صارفین کے موبائل فون آئی ایم ای آئی نمبرز اور سم کارڈز نمبرز پر مشتمل ایک پیئر بن جائیگا اور اس عمل میں تقریباً ایک ماہ کی مدت درکار ہو گی۔

انہوں نے بتایا کہ دوسرے مرحلے میں جلد ہی عوام کے لئے ایس ایم ایس کوڈ سروس 3742 کا آغاز کیا جائیگا جس کے ذریعہ عوام فقط ایک ایس ایم ایس کے تحت موبائل فونز کا پتہ لگا سکیں گے کہ موبائل فون کہیں چوری کا یا چھینا گیا اسمگل شدہ یا کسی بھی حوالے سے غلط استعمال میں تو لایا گیا نہیں ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ امید ہے کہ اپریل2018ء تک یہ سسٹم قابل عمل ہوجائیگا جس کے بعد چھینا گیا چوری شدہ یا اسمگل شدہ موبائل فونز کی خریدوفروخت کے انسدادی اقدامات نا صرف مؤثر ہوجائیں گے بلکہ اس سے جرائم کا سدباب بھی ممکن ہو جائیگا۔

دوران اجلاس وزیرداخلہ سندھ نے پی ٹی اے کی جانب سے متذکرہ اقدامات پر مشتمل پروجیکٹ کے تحت اٹھائے گئے جملہ امور/اقدامات کو سراہا اور تعریف کی۔ ان کا کہنا تھا کہ ان سفارشات/ اقدامات کی بدولت صارفین کوفقط شکایت پر ہی اپنا موبائل فون اور سم کارڈ بلاک کرنے کی سہولت میسر آجائیگی۔ علاوہ ازیں مذکورہ اقدامات سے متعلق جملہ امور پی ٹی اے اور موبائل فونز کمپنیز باہم مل کر طے کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ اسٹریٹ کرائمز جیسے جرائم کے خلاف بحیثیت اہم اسٹیک ہولڈر ہمیں آہنی اقدامات کرنا ہوں گے اور اس سلسلے میں ہمارا پہلا قدم یہ ہوگا کہ چھینے گئے اور چوری شدہ اور اسمگل شدہ موبائل فونز کی خریدوفروخت کی روک تھام اور اس فعل میں ملوث عناصراور گروہوں کو قانون کی گرفت میں لانے کے لئے ہر سطح پر انتہائی ٹھوس اور مربوط اقدامات کو یقینی بنایا جائے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 14/02/2018 - 20:13:22

اس خبر پر آپ کی رائے‎

متعلقہ عنوان :