حافظ آباد ، بون میرو نکالنے والے گروہ کا سرغنہ200سے زائد خواتین کے بلڈ سیمپل نکال ..
تازہ ترین : 1

حافظ آباد ، بون میرو نکالنے والے گروہ کا سرغنہ200سے زائد خواتین کے بلڈ سیمپل نکال چکا

متعدد متاثرہ خواتین کا کام کاج اور چلنا پھرنا مشکل ہو گیا، پولیس نے سولہ متاثرہ خواتین کے میڈیکل کروانے کے بعد نمونہ جات پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹی بجھوا دیئے،گرفتار ملزمان کا مقامی عدالت سے دو روز ہ ریمانڈ حاصل کر لیا گیا

حافظ آباد ، بون میرو نکالنے والے گروہ کا سرغنہ200سے زائد خواتین کے بلڈ ..
حافظ آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 فروری2018ء) حافظ آباد میں غریب خواتین کو فنڈز کا جھانسہ دے کر اُن کی ریڑھ کی ہڈی سے بون میرو نکالنے والے گروہ کے بارے متاثرین کا بڑا انکشاف۔ گروہ کا سرغنہ دو سوسے زائد خواتین کے بلڈ سیمپل نکال چکا ہے۔متعدد متاثرہ خواتین کا کام کاج اور چلنا پھرنا مشکل ہو گیا۔ پولیس نے سولہ متاثرہ خواتین کے میڈیکل کروانے کے بعد نمونہ جات پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹی بجھوا دیئے۔

گرفتار ملزمان کا مقامی عدالت سے دو روز ہ ریمانڈ حاصل کر لیا گیا۔تفصیلات کے مطابق حافظ آباد میں سادہ لوح غریب خواتین کو وزیر اعظم جہیز فنڈز اور مالی امداد کا جھانسہ دے کر بون میرو نکالنے کا مکروہ دھندہ کرنے والے مرکزی ملزم اور اس کے دیگر ساتھیوںکے بارے متاثرہ خواتین نے دل ہلا دینے والے انکشافات کیے ۔ملزم ندیم دو ماہ سے یہ دھندہ کر رہا تھا۔

گروہ میں شامل آمنہ بی بی خواتین کو جہیز فنڈز کا جھانسہ دے کر اپنے گھر لاتی جہاں ملزم اُن کے جسم کے مختلف حصوں سے جسمانی مادے نکالتا۔غربت کی ماری کئی خواتین پیسوں کے لالچ میں اپنا بلڈ سیمپل اور بون میرو نکلوانے خود ملزم کے پاس آتیں۔متاثرخواتین کا کہنا ہے کہ ندیم نے اُن کے بلڈ سیپمل اور جسمانی مادہ نکال کر اُنھیں اپاہج بنا دیا ہے ۔

اب اُن کے لیے چلنا پھرنا اور کام کرنا بھی مشکل ہو گیا ہے۔ملزم ابتک دو سو سے زائد خواتین کت بلڈ سیمپل اور بون میرو نکال چکا ہے انکا کہنا تھا کہ بہت سی خواتین بدنامی اور خوف کے مارے سامنے نہیں آ رہی اگر حکومت انہیں سپورٹ فراہم کرے تو وہ بھی ملزم کے خلاف بہت کچھ بتانا چاہتی ہیں انہوں نے میاں نواز شریف اور وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا کہ انکا کا نام بدنام کر کے سادہ لوح اور غریب خواتین کی زندگیوں سے کھیلنے والے دردہ صفت انسان کے خلاف سخت کاروائی کرتے ہوئے اسے سزا موت دی جائے ۔

ڈی پی او ڈاکٹر سردار غیاث گل کا کہنا ہے کہ پولیس نے بروقت کاروائی کرتے ہوئے گروہ میں شامل خاتون سمیت چار ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا جبکہ خواتین بلڈ سیپمل اور بون میرو خریدنے والے ڈی ٰ ایچ کیو کے ملازم ساجد کو گرفتار کر لیا گیا۔ جس سے تفتیش کی جا رہی ہے انکا کہنا تھا کہ واقعہ کی تحقیقات کے لیے ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو تین روز میں اپنی رپورٹ پیش کرے گی۔

ایم ایس ڈی ایچ کیو ہسپتال ڈاکٹر ریحان اظہر کا کہنا ہے کہ سولہ خواتین کے میڈیکل مکمل کر لیے گئے ہیں ،خواتین کی ریڑھ کی ہڈی اور جسم کے دوسرے حصوں پر انجکشن کے نشانات بھی پائے گئے ہیں۔خواتین کے نمونے پنجاب فرانزک سائنس لیبارٹی بھجوائے گئے ہیں۔دوسری جانب وفاقی وزیر صحت سائرہ افضل تارڑ نے واقعہ پر گہرے دُکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ غریب خواتین کو جہیز اور مالی امداد کا جھانسہ دے کر اُن کی زندگیوں سے کھیلنے والوں سے کسی قسم کی رعایت نہیں برتی جائے گی اورملزمان کو کیفر کردارتک پہنچایا جائے گا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

اس خبر نوں پنجابی وچ پڑھو
وقت اشاعت : 13/02/2018 - 15:14:52

اس خبر پر آپ کی رائے‎

متعلقہ عنوان :