ملک میں تعلیم کی شرح کو ترقی یافتہ ممالک کے برابر لایا جائے،
تازہ ترین : 1

ملک میں تعلیم کی شرح کو ترقی یافتہ ممالک کے برابر لایا جائے،

آج جس راستے پر ہم چل پڑے ہیں ایک دن پاکستان میں تعلیم کی شرح 100 فیصد ہو جائے گی، سرکاری یونیورسٹیوں کے ساتھ پرائیویٹ یونیورسٹیاں بھی معیاری تعلیم دے رہی ہیں گورنر خیبر پختونخوا اقبال ظفر جھگڑا کا سرحد یونیورسٹی کے کانووکیشن سے خطاب

ملک میں تعلیم کی شرح کو ترقی یافتہ ممالک کے برابر لایا جائے،
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 فروری2018ء) گورنر خیبر پختونخوا اقبال ظفر جھگڑا نے کہا ہے کہ ہماری خواہش ہے کہ ملک میں تعلیم کی شرح کو ترقی یافتہ ممالک کے برابر لایا جائے، آج جس راستے پر ہم چل پڑے ہیں ایک دن پاکستان میں تعلیم کی شرح 100 فیصد ہو جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو یہاں سرحد یونیورسٹی کے کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ جب سے گورنر خیبر پختونخوا کا عہدہ سنھبالا ہے، ملک میں تعلیم کی شرح کو آگے لے جانے کی خواہش ہے۔ آج ہماری تعلیم کی شرح قابل فخر نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ میری خواہش ہے کہ پاکستان میں تعلیم کی شرح کو ترقی یافتہ ممالک کے برابر لایا جائے اور آج ہم جس راستے پر چل پڑے ہیں ایک دن پاکستان میں تعلیم کی شرح سو فیصد ممکن ہو جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ مستقبل نو جوانوں کا ہے اور نوجوان ملک کو آگے لے کر جائیں گے۔ گورنر خیبر پختونخوا نے کہا کہ سرحد یونیورسٹی معیاری تعلیم فراہم کر رہی ہے اور یہ کے پی کے کی بہترین یونیورسٹی ہے۔ اس موقع پر چیئرمین ہائر ایجوکیشن کمیشن ڈاکٹر مختار نے کانووکیشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کوئی بھی حکومت اکیلے تعلیمی مسائل حل نہیں کر سکتی، اس ضمن میں نجی شعبہ کو آگے آنا ہوگا۔

انہوں نے کہا کہ تعلیمی مسائل کے حل کے لئے فیکلٹی ممبران پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ طلبا کی تعلیم کے ساتھ تربیت کی بھی ضرورت ہے۔ پاکستان کا مستقبل روشن ہے۔ انہوں نے کہا کہ پڑوسی ممالک پاکستان کی ترقی کو رول ماڈل کے طور پر دیکھ رہے ہیں۔ ڈاکٹر مختار نے کہا کہ ملک کی آبادی کا 60 فیصد نوجوان ہمارا اثاثہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تعلیم کی اہمیت سے کوئی انکار نہیں کرسکتا، ہمارے بچے تعلیم کے حصول کے لئے بیرون ملک جا رہے ہیں، سرکاری یونیورسٹیوں کے ساتھ پرائیویٹ یونیورسٹیاں بھی معیاری تعلیم دے رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اساتذہ تعلیم کے ساتھ تر بیت بھی کریں اور بچوں کو حب الوطنی سکھائیں، آج مل کر پاکستانیوں کو ایک قوم بنانا ہو گا۔ چیئرمین ایچ ای سی نے کہا کہ قائداعظم نے بڑی قربانیوں سے ہمارے ملک پاکستان کو قائم کیا، آج ہمیں ایک قوم کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ نوجوانوں نے ہی پاکستان کے مسائل کا حل نکالنا ہے۔ قبل ازیں سرحد یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر سلیم الرحمان نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا۔

گورنر خیبر پختونخوا نے کانووکیشن میں 1500 سے زائد طلباء و طالبات کو پی ایچ ڈی، ایم ایس اور بی ایس کی ڈگریاں اور نمایاں پوزیشن حاصل کرنے والے طلباء کو گولڈ میڈیل دیئے گئے۔ کانووکیشن میں طلباء و طالبات کے والدین، اساتذہ کرام اور عزیز و اقارب سمیت مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات نے شرکت کی۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 13/02/2018 - 15:08:23

اس خبر پر آپ کی رائے‎

متعلقہ عنوان :