میں چیف جسٹس ہوتا تو زینب کا قاتل پکڑا جا چکا ہوتا، سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری
تازہ ترین : 1

میں چیف جسٹس ہوتا تو زینب کا قاتل پکڑا جا چکا ہوتا، سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری

میں چیف جسٹس ہوتا تو زینب کا قاتل پکڑا جا چکا ہوتا، سابق چیف جسٹس افتخار ..
قصور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار- 13جنوری 2018ء ): سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری نے دعویٰ کیا ہے کہ میں چیف جسٹس ہوتا تو زینب کا قاتل پکڑا جا چکا ہوتا۔تفصیلات کے مطابق زینب زیادتی کیس میں قاتلوں کی تاحال عدم گرفتاری پر تبصرہ کرتے ہوئے سابق چیف جسٹس افتخار محمد چوہردی کا کہنا تھا کہ میں چیف جسٹس ہوتا تو زینب کا قاتل پکڑا جا چکا ہوتا۔وہ گزشتہ روز زینب کے گھر کے باہر میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے ۔

اس موقع پر انکا کہنا تھا کہ اگر میں چیف جسٹس ہوتا تو اب تک ملزم پکڑا جا چکا ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت کہتی ہے مجرم ایک سیریل کلر ہے۔ ملزم ایک سیریل کلر ہے تو پھر اس حکومت کی ناکامی کھل کر سامنے آگئی۔ انہوں نے مطالبہ کیاکہ ملزم کو پھانسی کی سزا دی جانی چاہئے۔انکا مزید کہنا تھا کہ پولیس فائرنگ سے شہید ہونے والے اہلکاروں کا مقدمہ کو بھی اسی طرح دیکھا جائے جیسے زینب جیسی بیٹیوں کے کیس کو دیکھا جارہا ہے کیونکہ وہ لوگ بھی ہماری بچیوں کو انصاف دلانے کا مطالبہ لیکر نکلے تھے۔بعد ازاں سابق چیف جسٹس نے مظاہرے کے دوران جاں بحق ہونے والوں کے لیے دعائے مغفرت بھی کی۔
وقت اشاعت : 13/01/2018 - 19:05:12

اس خبر پر آپ کی رائے‎