فروری تک حکومت کے خاتمے کا امکان ،حقیقت کو جھٹلایا نہیں جا سکتا
تازہ ترین : 1

فروری تک حکومت کے خاتمے کا امکان ،حقیقت کو جھٹلایا نہیں جا سکتا

لاہور (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار ۔13جنوری2018ء):موجودہ حکومت کی زندگی فروری تک ظاہر کی جا رہی ہے ۔قومی آخبار میں فراہم کردہ تفصیلات کے مطابق ذرائع نے دعوی کیا ہے کہ مجھے حکومت کے جانے کا طریقہ کار تو نہیں پتا لیکن جو بھی کیا جائے گا وہ آئینی حدود کے اندر رہتے ہوئے کیا جائے گا جبکہ 17جنوری کوڈاکٹر طاہر القادری نے حکومت کے خلاف احتجاج شروع کرنے کا اعلان کر رکھا ہے جس میں پاکستان تحریک انصاف اور پیپلز پارٹی بھی شریک ہو رہی ہیں ۔

اگر ڈاکٹر طاہر القادری حکومت کے خلاف احتجاج شروع کر دیتے ہیں اور اور اس احتجاج میں عمران خان اور آصف علی زرداری پوری قوت کے ساتھ شریک ہو جاتے ہیں تو پھر مسلم لیگ (ن) کی حکومت کے لئے نا قابل بیان مشکلات پیدا ہو سکتی ہیں جبکہ دوسری جانب موجودہ حکومت کے اتحادی مولانا فضل الرحمن بھی مسلم لیگ (ن) سے دور ہوتے ہوئے دکھائی دے رہے ہیں ۔ اگر ڈاکٹر طاہر القادری 17جنوری کو ملک گیر احتجاج شروع کر دیتے ہیں تو وہ ن لیگ کے لئے خاصا خطر ناک ثابت ہو گی اور اس وقت سیاست خاصی ہنگامہ خیز ہو گی اور اس وقت موجودہ حکومت کا پتا آصف علی زرداری اور عمران خان کے پاس ہے ۔ 
وقت اشاعت : 13/01/2018 - 16:35:52

اس خبر پر آپ کی رائے‎

The possibility of the end of the government by February, the fact can not be denied

The present life of the present government is being displayed till February. According to the details given in the last few years, sources claimed that I do not have the procedure to go to the government, but whatever is done will be done within the constitutional boundaries. What will happen when Janaktor Tahir-ul-Qadri January 17 has announced to start protest against the government in which Pakistan Tehreek-e-Insaf (PTI) and PPP are also participating