چیف جسٹس کا مارکیٹوں سے ڈبے والے دودھ اٹھانے ، نمونے پی سی ایس آئی آر بھیجنے کا ..
تازہ ترین : 1

چیف جسٹس کا مارکیٹوں سے ڈبے والے دودھ اٹھانے ، نمونے پی سی ایس آئی آر بھیجنے کا حکم

ڈبوں میں فروخت ہونے والا دودھ، دودھ نہیں فراڈ ہے، یہ سفید مادہ ہے، ڈبوں پر تحریر کریں کہ یہ دودھ کا نعم البدل نہیں، چیف جسٹس کے ریمارکس

چیف جسٹس کا مارکیٹوں سے ڈبے والے دودھ اٹھانے ، نمونے پی سی ایس آئی آر ..
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 جنوری2018ء) چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے مارکیٹوں سے فوراً ڈبے والے دودھ اٹھانے اور دودھ کے تمام نمونے پی سی ایس آئی آر بھیجنے کا حکم د یتے ہوئے کہا ہے کہ ڈبوں میں فروخت ہونے والا دودھ، دودھ نہیں فراڈ ہے، یہ سفید مادہ ہے، ڈبوں پر تحریر کریں کہ یہ دودھ کا نعم البدل نہیں ۔ ہفتہ کو سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں ڈبے کے ناقص دودھ سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی تو عدالت عظمی نے ڈبوں کے دودھ کے تمام نمونے پی سی ایس آئی آر بھیجنے کا حکم دیا اور دودھ کے نمونوں کے ٹیسٹ کی ذمے داری فیصل صدیقی ایڈووکیٹ کو سونپ دی گئی۔

چیف جسٹس نے ایڈووکیٹ جنرل سندھ کو حکم دیا کہ دودھ کی پروڈکٹس ٹیسٹ کے لیے بھیجیں۔چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ڈبوں میں فروخت ہونے والا دودھ، دودھ نہیں فراڈ ہے، یہ سفید مادہ ہے۔معزز جج نے استفسار کیا کہیں ان ڈبوں کے دودھ میں یوریا تو شامل نہیں انہوں نے حکم دیا کہ آج ہی مارکیٹوں سے پیکٹ والے دودھ کی تمام برانڈز کی مصنوعات اٹھائیں۔جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ حکم دیں گے کہ ڈبوں پر تحریر کریں کہ یہ دودھ کا نعم البدل نہیں۔

چیف جسٹس نے کہا پنجاب میں کروڑوں روپے لگا کر لیبز ٹھیک کرائی ہیں، سندھ میں فوڈ اتھارٹی ہی نہیں، سندھ حکومت کیا کررہی ہی ایڈووکیٹ جنرل سندھ نے عدالت کو بتایا کہ فوڈ اتھارٹی کی قانون سازی کرلی اور فنڈرز مختص کردیئے ہیں اس پر چیف جسٹس نے کہا کہ اتھارٹی بنتی رہے گی،کیا جب تک شہریوں کو غیر معیاری دودھ پلائیں گی

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 13/01/2018 - 15:32:06

اس خبر پر آپ کی رائے‎

The order of sending Chief Justice of the Chief Justice to carry the container milk, sample PCSIR The milk sold in the boxes, milk is not fraud, it is white substance, write on the boxes that it does not change the amount of milk, the Chief Justice's remarks

Chief Justice Pakistan Justice Saqib Nisar ordered the order to send all the milk packed milk and paste samples of PCSIR, saying that the milk sold in the boxes is not fraudulent, it is a white substance, Write on the boxes that it does not change the milk. The Supreme Court Karachi Registry was hearing the case of poor cannabis case, the Supreme Court ordered the PCSIR to send all the samples of dubbed milk and swap to Faisal Siddiqui Advocate for the test of milk samples. was given

Related : Chief Justice

متعلقہ عنوان :