بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والا گروہ گرفتار
تازہ ترین : 1

بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والا گروہ گرفتار

بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والا گروہ گرفتار
برلن ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 جنوری2018ء) جرمن پولیس نے بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والا گروہ گرفتار کر لیا۔ گرفتار ہونے والے 8 افراد میں جرمن فوج کا اہلکار اور 47 سالہ خاتون بھی شامل ہے۔ خاتون اپنے بیٹے کو بھی جنسی زیادتی کا نشانہ بناتی رہتی تھی۔ ایک جرمن، ایک سوئس اور ایک ہسپانوی شہری بھی گروہ کا حصہ ہیں۔جرمن پولیس کی جانب سے جاری کی گئی تفصیلات کے مطابق بچوں سے جنسی زیادتی میں ملوث گروہ کے ارکان میں اس 47 سالہ خاتون کو بھی گرفتار کیا گیا ہے جو اپنے پارٹنر کے ساتھ مل کر اپنے ہی بیٹے کو نہ صرف جنسی تشدد کا نشانہ بناتی رہی تھی بلکہ اپنے نو سالہ بیٹے کی پیسوں کے عوض تجارت  بھی کرتی رہی تھی۔

پولیس کے مطابق خاتون اور اس کے پارٹنر کو گزشتہ برس ستمبرمیں گرفتار کیا گیا تھا۔ یہ واقعہ جرمن ریاست باڈن ورٹمبرگ میں پیش آیا تھا۔جاری کی گئی مزید تفصیلات کے مطابق بچے کو زیادتی کا نشانہ بنانے والے چھ افراد کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ ان میں ایک جرمن فوجی اہلکار سمیت ایک جرمن ،ایک سوئس اور ایک ہسپانوی شہری شامل ہے۔ پولیس کے مطابق گرفتار کئے گئے تمام افراد سے تفتیش جاری ہے اور امید کی جا رہی ہے کہ اس کیس کے حوالے سے مزید تفصیلات بھی جلد سامنے آئیں گی۔
وقت اشاعت : 13/01/2018 - 01:30:37
Germany: Sexual abusive group arrested

German police arrested a gang-abusive group with children. 8 people arrested include German army and 47-year-old women. The woman also accused her son of sexual abuse. A German, a Swiss and a Spanish citizen are also part of the group. According to the details issued by the German police, 47-year-old women have been arrested in the members of the group involved in abusive sexual abuse. Together, not only did his own son target sexual abuse but also traded for his nine-year-old son's money.