سندھ کی ساری پولیس وزیر اعلیٰ ہائوس پر لگی ہوئی ہے،عوام غیر محفو ظ ہیں ،، حلیم ..
تازہ ترین : 1

سندھ کی ساری پولیس وزیر اعلیٰ ہائوس پر لگی ہوئی ہے،عوام غیر محفو ظ ہیں ،، حلیم عادل شیخ رہنماء پی ٹی آئی سندھ

سندھ کی ساری پولیس وزیر اعلیٰ ہائوس پر لگی ہوئی ہے،عوام غیر محفو ظ ہیں ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جنوری2018ء)زینب کے دل دھلانے والے واقعے کے بعد پورے ملک میں معصوم بچیاں بھی غیر محفوظ ، کراچی کے علاقے ابراہیم حیدری میں نجی اسکول میں چار سالا ننی پری سے اسکول کے چوکیدار کی زیادتی کی کوشش، ورثا و دیگر علاقہ مقین پہنچ گئے ، خبر علاقے میں آگ کی طرح پھیل گئی نوٹس لیتے ہوئے پی ٹی آئی سندھ کے سینیئر ایگزیکیوٹو نائب صدر حلیم عادل شیخ بھی نجی اسکول پہنچ گئے ، بڑی تعداد میں مشتعل مظاہرین نے اسکول کو محاصرے میں لے کرملزم کا جلانے کی کوشش پتھرائو بھی کیا، پی ٹی آئی رہنما حلی عادل شیخ ملوث چوکیدار عیدو بدین پوٹو درس کو زخمی حالت میں عوام سے بچاتے ہوئے پولیس موبائل میں لیکر ابراہیم حیدری تھانے پر پہنچا دیا، جہاں پر ملزم کو پولیس کے حوالے کر دیا گیا ہے جہاں پر مزید تفتیش کی جارہی ہے جبکہ دوسری جانب رینجرز کی بڑی تعداد بھی علائقے میں پہنچ گئے ۔

پی ٹی آئی رہنما حلیم عادل کی تھانے پر موجود گی کے اطلاع پر ایک سال قبل زیادتی کے بعد کلا اور ہاٹھ کاٹ کر زخمی کرنے حالت میں پھینکی گئی متاثرہ معصوم بچی سویرا کے والدین سویرا کو ساتھ لیکر تھانے پر پہنچ گئے اور میڈیا سے بات چیت کرتے کہا کہ ایک سال قبل حیوانیت سوچ کے پیروکاروں نے میری معصوم بیٹی کو زیادتی کرنے کے بعد گلا اور بازو کاٹ کے سڑک پر لاش کی طرح پھینگ دیا تھا جس کے بعد میڈیا پر سب نے نوٹس لیے تھا اور کورٹ نے بھی از خود نوٹس لیا تھا لیکن آج تک ملزمان نہیں پکڑے گئے نہ ہمیں انصاف ملا ہے، اس موقعہ پر پی ٹی آئی رہنما حلیم عادل شیخ نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ انصاف کے تقاضے پورے نہیں ہوتی اس لئے مجرموں کو سزا نہیں ملتی ہے، ایسے وحشی درندوں کو سرے عام پھانسی دی جائے مقدمات فوجی عدالتوں میں چلائے جائے ، انہوں نے کہا سندھ کی پولیس وزراء کو پروٹوکول دینے اور مال بنانے میں مصروف عمل ہے۔

انہوں نے کہا اسی علائقے میں تین لڑکیوں کو زیادتی کے بعد قتل کیا گیا ایک کا گلا کاٹا گیا ، لیکن ورثا آج تک سراپا احتجاج ہیں سندھ حکومت ان کو انصاف دلانے میں ناکام گئی ہے، انہوں نے کہا کچھ روز قبل بنگالی برادری سے تعلق رکھنے والے ایک غریب کے پانچ سالا بچے کو بھی تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد قتل کرکے لاش سمندر میں پھینکی گئی لیکن کسی نے بھی انصاف نہیں دلوایا، انہوں نے کہا کہ معصوم سویرا کے ساتھ بہت ظلم ہوا تھا زیادتی کرنے کے بعد مجرموں نے زندہ لاش کی طرح گلا اور کاٹ کے کوڑے کے ڈھیر پر پھینک دیا تھا لیکن ایک سال گذرنے کے بعد بھی ورثا انصاف کی دھائیاں دے رہیں ان کو ابھی تک انصاف نہیں ملا، وقت کے ساتھ ساتھ سارے واقعات بھی بھلا دیئے جاتے ہیں، انہوں نے مزید کہا کہ اس معاشرے میں ہماری معصوم بچیوں کی عزتیں بھی محفوظ نہیں پولیس ہمیشہ ایسے واقعات کے بعد سرگرم ہوتی ہے مگر عملی کام نہیں کیا ۔

آج 4 سالا معصوم بچی سے زیادتی کی کوشش کی گئی ہے اسی ملزم نے پہلے بھی ایسی حرکات کی ہیں ۔انہوں نے کہا سندھ پولیس بھی پنجاب پولیس کی طرح ناکام ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں نجی اسکول انتظامیہ نے بھی کوئی ایسا سسٹم نہیں بنایا جس سے بچوں کو بچایا جائے اگر ابھی بھی انتظامیہ حرکت میں نہ آئی تو اس معاشرے میں زینب جیسے واقعات ناگزیر ہیں ۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 12/01/2018 - 20:09:31

اس خبر پر آپ کی رائے‎

The Sindh Police is engaged in high level, the people are non-conservative, Hameed Adil Sheikh leader PTI Sindh

After the incident of Zenab's heart-attack, innocent children in the entire country were also safe and safe, in the area of ​​Khabar area, four years old Nanny Fairy in the private school in Ibrahim Haidri area of ​​Karachi, in the Khabar area. Hailem Adil Shaikh, senior executive vice-president of the Leading PTI Sindh, also reached the private school, a large number of protesters stoned the attempt to burn the school by stirring stones, PTI leader Hail Adil Sheikh involved in police mobile by saving people from injured people in injured condition Abram Ibrahim reached to the police station, where the accused has been handed over to the police where more investigation is being done, while the number of Rangers reached the region on the other side.

Related : Sindh, Chief Minister, Police

متعلقہ عنوان :