آبادی پر نیشنل پارلیمنٹری کانفرنس جلد منعقد کی جائیگی،کانفرنس میں پاکستان کو ..
تازہ ترین : 1

آبادی پر نیشنل پارلیمنٹری کانفرنس جلد منعقد کی جائیگی،کانفرنس میں پاکستان کو درپیش مسائل پر غور و خوض کرکیا جائیگا،قصور واقعے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے،گلگت بلتستان سے بلوچستان تک یہ ملک ہم سب کا ہے،ہمیں ملکر کام کرنا ہے،سیاسی وابستگی سے بالاتر ہوکر ملکی ترقی کیلئے کام کرنا ہوگا،اتحاد اور قانون سازی سے پیچیدہ مسائل حل ہوسکتے ہیں،آمریت کے دور میں 9سال تک عوام کی آواز ایوانوں تک نہیں پہنچنے دی گئی،ملک میں جمہوریت کا تسلسل مستحکم ہورہا ہے،

2018میں عوام کارکردگی کی بنیاد پر ووٹ دیں گے،ریڈیو اور ٹی وی پر عوامی آگاہی سے متعلق پروگرام شروع کیے جارہے ہیں وزیر مملکت اطلاعات مریم اورنگزیب کا پارلیمنٹ میںپائیدار ترقیاتی اہداف کے حصول پر گول میز کانفرنس سے خطاب

آبادی پر نیشنل پارلیمنٹری کانفرنس جلد منعقد کی جائیگی،کانفرنس میں ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جنوری2018ء)وزیر مملکت اطلاعات و قومی ورثہ مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ آبادی پر نیشنل پارلیمنٹری کانفرنس منعقد کی جائیگی،کانفرنس میں پاکستان کو درپیش مسائل پر غور و خوض کرکیا جائیگا،قصور واقعے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے،گلگت بلتستان سے بلوچستان تک یہ ملک ہم سب کا ہے،ہمیں ملکر کام کرنا ہے،سیاسی وابستگی سے بالاتر ہوکر ملکی ترقی کیلئے کام کرنا ہوگا،اتحاد اور قانون سازی سے پیچیدہ مسائل حل ہوسکتے ہیں،آمریت کے دور میں 9سال تک عوام کی آواز ایوانوں تک نہیں پہنچنے دی گئی،ملک میں جمہوریت کا تسلسل مستحکم ہورہا ہے،2018میں عوام کارکردگی کی بنیاد پر ووٹ دیں گے،ریڈیو اور ٹی وی پر عوامی آگاہی سے متعلق پروگرام شروع کیے جارہے ہیں۔

وہ جمعہ کو پارلیمنٹ ہائوس میںپائیدار ترقیاتی اہداف کے حصول پر گول میز کانفرنس سے خطاب کر رہی تھیں۔وزیر مملکت مریم اورنگزیب نے کہا کہ کانفرنس کے انعقاد سے ترقی کے بیانیے کا وژن سچ ہوتا دکھائی دیتا ہے،ہماری ذمہ داری ہے کہ پائیدارترقیاتی اہداف کیلئے ہم اپنے پارلیمانی وسائل استعمال کریں،ہماری متعلقہ حکومتیں پائیدار ترقی کے حصول کیلئے مقرر کردہ اہداف پر عمل پیرارہیں ،انہوں نے کہا کہقصور واقعے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے،ہماری ذمہ داری ہے ایسے اقدامات کریں کہ مستقبل میں ایسے واقعات نہ ہوں،قانون ایسا ہونا چاہیے ہر سطح پر جس پر عملدرآمد کیا جاسکے۔

وزیر مملکت اطلاعات نے کہا کہ سزاؤں کو عبرتناک بنانے کیلئے پنجاب حکومت اقدمات کررہی ہے،اللہ اور اس کے رسولؐ نے حقوق العباد پر زیادہ زور دیا ہے،مساجد سے حقوق العباد سے متعلق آگاہی دینے کی زیادہ ضرورت ہے،نصاب میں بھی اس سے متعلق آگاہی مہم کی ضرورت ہے،پرائمری سطح تک والدین اور اساتذہ کو بچوں میں اس سلسلے میں آگاہی پیدا کر نی چاہیئے۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ ارکان پارلیمنٹ اپنے حلقوں میں وڑن 2025 سے متعلق تصاویر کے ذریعے تجاویز دیں، آبادی پر نیشنل پارلیمنٹری کانفرنس منعقد کرنے والے ہیں،نیشنل پارلیمنٹری کانفرنس پاکستان کو درپیش مسائل پر غور و خوض کرے گی،ملک میں ماں اور بچے کی صحت پر بھرپور توجہ کی ضرورت ہے،صحت سے متعلق مسائل حل کرنے سے غربت میں کمی آئے گی،گلگت بلتستان سے بلوچستان تک یہ ملک ہم سب کا ہے،ہمیں ملکر کام کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہسیاسی وابستگی سے بالاتر ہوکر ملکی ترقی کیلئے کام کرنا ہوگا،اتحاد اور قانون سازی سے پیچیدہ مسائل حل ہوسکتے ہیں،آمریت کے دور میں 9سال تک عوام کی آواز ایوانوں تک نہیں پہنچنے دی گئی،ملک میں جمہوریت کا تسلسل مستحکم ہورہا ہے،2018میں عوام کارکردگی کی بنیاد پر ووٹ دیں گے،ریڈیو اور ٹی وی پر عوامی آگاہی سے متعلق پروگرام شروع کیے جارہے ہیں۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 12/01/2018 - 17:55:54

اس خبر پر آپ کی رائے‎

The National Parliamentary Conference will be held soon on the population, the issues facing Pakistan will be discussed and the crime is less to be condemned, Gilgit-Baltistan is the country of all of us till Balochistan. We work together. There is a need for political development to work for the development of the country, complications and legislation can solve complex problems, people have not been able to reach the house for dictatorship during the dictatorship, and the stability of democracy is stable in the country, In 2018, people will vote based on performance, public awareness programs on radio and TV are started Are Addressing a round table conference on achieving sustainable development goals in Parliament, Minister of State Information, Mary Oranzeb

Minister of State for Information and National Heritage, Mary Aurangzeb said that the National Parliamentary Conference will be held on the population, the conference will discuss issues related to Pakistan, and it will be decided to condemn the incident, which is less likely to be condemned from Gilgit-Baltistan to Balochistan. This country is all of us, we have to work together, to cooperate with political commitment, to work for the development of the country, complications and legislation can solve complicated problems, to reach public meetings for 9 years in the era of dictatorship. The country's stability in the country is stable, in 2018, people will vote based on performance, radio T professional public awareness programs on TV are being launched

Related : Pakistan, Balochistan, Parliament, Democracy, Vote, Maryam Aurangzeb