مسئلہ کشمیر کے حل تک کسی بھی قسم کے ٹیکسوں کا نفاذ غیر آئینی ہوگا،سپیکر گلگت بلتستان ..
تازہ ترین : 1

مسئلہ کشمیر کے حل تک کسی بھی قسم کے ٹیکسوں کا نفاذ غیر آئینی ہوگا،سپیکر گلگت بلتستان اسمبلی

ٹیکس کے حوالے سے عوامی رائے کو مدنظر رکھا جائے گا‘ اسمبلی ممبران عوامی نمائندے ہیں اگر عوام ٹیکس قبول نہیں کر تے تو ہم بھی نہیں کریں گے‘ فدا محمد ناشاد کی آئی این پی سے خصوصی گفتگو

مسئلہ کشمیر کے حل تک کسی بھی قسم کے ٹیکسوں کا نفاذ غیر آئینی ہوگا،سپیکر ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جنوری2018ء) سپیکر گلگت بلتستان اسمبلی فدا محمد ناشاد نے کہا ہے کہ ٹیکس کے حوالے سے عوامی رائے کو مدنظر رکھا جائے گا‘ اسمبلی میں موجود ممبران عوامی نمائندے ہیں اگر عوام ٹیکس قبول نہیں کریں گے تو ہم بھی ٹیکس قبول نہیں کریں گے‘ مسئلہ کشمیر کے حل تک کسی بھی قسم کے ٹیکسوں کا نفاذ غیر آئینی ہوگا۔ جمعہ کو انہوں نے اسلام آباد میں ’’آئی این پی‘‘ سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان اسمبلی میں موجود ممبران عوامی نمائندے ہیں اگر عوام ٹیکسوں کے نفاذ کے مخالف ہیں تو بحیثیت عوامی نمائندوں کے ہم بھی کسی قسم کا ٹیکس قبول نہیں کریں گے۔ جب تک مسئلہ کشمیر کا حل نہیں نکلتا تب تک گلگت بلتستان میں ٹیکسوں کا نفاذ غیر آئینی ہے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 12/01/2018 - 16:35:17

اس خبر پر آپ کی رائے‎

Any kind of tax to settle the issue of Kashmir issue will be unconstitutional, Speaker Gilgit-Baltistan Assembly Public opinion regarding taxes will be monitored 'assembly members are public representatives if people do not accept taxes and we will not do it' Fida Mohammad Naqshid's special interaction with the ANP

Speaker, Gilgit-Baltistan Assembly, Fida Mohammad Nashsh said that public opinion regarding the tax will be monitored. Members in the assembly are public representatives if the public does not accept taxes, we will not accept the tax. Taxes will be non-constitutional to any type of tax

Related : Assembly, Occupied Kashmir, Kashmir Dispute