سپریم کورٹ نے پی سی اوججز کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم کردی
تازہ ترین : 1

سپریم کورٹ نے پی سی اوججز کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم کردی

سپریم کورٹ نے پی سی اوججز کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم کردی
اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔12 جنوری۔2018ء)سپریم کورٹ نے پی سی اوججز کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی ختم کردی۔چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 4 رکنی خصوصی لارجر بینچ نے پی سی او کے تحت حلف اٹھانے والے ججز کے خلاف توہین عدالت کی 14 درخواستوں کی سماعت کی۔چیف جسٹس پاکستان میاں ثاقب نثار نے پی سی او ججز کے خلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے کہ معاملہ 10، 11سال پرانا ہوچکاہے۔

جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ سابق چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ افتخار حسین چوہدری کا انتقال ہوچکا ہے، توہین عدالت کا معاملہ عدالت اور مدعاعلیہ کے درمیان ہوتا ہے، عدالت توہین عدالت کے نوٹس واپس لے رہی ہے۔واضح رہے کہ 2007 میں سابق فوجی صدر پرویز مشرف کے دور میں 3نومبر 2007 کو پی سی او نافذ کیا گیا تھا جس کے تحت کئی ججز نے حلف اٹھایا تھا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 12/01/2018 - 14:52:23

اس خبر پر آپ کی رائے‎

The Supreme Court eliminated the offense court against PC Ozajs

Supreme Court adjourned the contempt of court against PC Ozajs. 4 judges of the Supreme Court headed by Justice Justice Mian Saqib Nisar, 14 appeals court contempt of court against the oath-taking judge under the PCO. Hearing of the case, Chief Justice Pakistan Mian Saqib Nisar remarked during the contempt of court case against PCO judges that matter was 10, 11 years old.

Related : Supreme Court, Contempt Of Court

متعلقہ عنوان :