قصور میں بچوں کیساتھ پہلے پیش آنے والے زیادتی کے واقعات پر کارروائی کرلی جاتی ..
تازہ ترین : 1

قصور میں بچوں کیساتھ پہلے پیش آنے والے زیادتی کے واقعات پر کارروائی کرلی جاتی تو زینب کیساتھ واقعہ پیش نہ آتا ،ْ عندلیب عباس

قصور میں بچوں کیساتھ پہلے پیش آنے والے زیادتی کے واقعات پر کارروائی ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 جنوری2018ء)پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی رہنما عندلیب عباس نے کہاہے کہ قصور میں بچوں کے ساتھ پہلے پیش آنے والے زیادتی کے واقعات پر کارروائی کرلی جاتی تو کمسن بچی زینب کے ساتھ یہ واقعہ پیش نہ آتا۔نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے عندلیب عباس نے کہا کہ قصور واقعہ کے پیچھے مزید 11 واقعات ہیں جن کا تذکرہ نہیں کیا جارہا ،ْاگر ہم نے ان واقعات کو نہیں اٹھایا تو کیا وہ بچے کم قیمتی تھے جو اپنی جان سے چلے گئے اور ان کا پتہ تک نہ چل سکا، میری اپنی بیٹی کا نام زینب ہے اور نہ جانے کتنی زینب ہیں جو پاکستان میں موجود ہیں۔

انہوںنے کہا کہ اس سے قبل بھی قصور میں 284 بچوں کے ساتھ زیادتی کے واقعات رونما ہوئے جو پاکستان کی تاریخ کا سب سے شرمناک واقع تھااس واقعہ میں نہ صرف پولیس ملوث تھی بلکہ اس معاملے میں بننے والی جے آئی ٹی‘ میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ اس میں اس وقت کے اراکین قومی و صوبائی اسمبلی بھی ملوث تھے، بعد ازاں ان سب کو بری کردیا گیا اور چند کم قصوروار افراد کو گرفتار کر کے کیس کو دبا دیا گیا۔
وقت اشاعت : 12/01/2018 - 14:52:41

اس خبر پر آپ کی رائے‎

Eventually, there was no incident with Zainab when action was taken against incidents of abusive evidence against children in Kasur.

The leader of Pakistan Tehreek-e-Insaf (PTI), Adilib Abbas, said that action against abducted children in Kasur could not be done with the girl's son Zainab, while talking to NG TV, Andhraib Abbas said that There are more 11 events behind the Kasuri incident, which were not mentioned, if we did not pick up these incidents, were the children less valuable, who went away from their lives and could not reach their address, my own daughter's name It is zenib and not how much zenibs are available in Pakistan