میری بچی 8 سال کی نہیں ساڑھے چھ سال کی تھی۔ والدہ زینب
تازہ ترین : 1

میری بچی 8 سال کی نہیں ساڑھے چھ سال کی تھی۔ والدہ زینب

میں اس سے وعدہ کر کے گئی تھی کہ اس بار مجھے عمرے پر جانے دو اگلی مرتبہ تمہیں لے جاؤں گی۔ والدہ زینب کی نجی ٹی وی چینل سے گفتگو

میری بچی 8 سال کی نہیں ساڑھے چھ سال کی تھی۔ والدہ زینب
قصور (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 12 جنوری 2018ء) : قصور میں کم سن بچی کے ساتھ درندگی کا واقعہ پیش آیا ۔ تفصیلات کے مطابق اس واقعہ کے خلاف قصور سمیت ملک بھر کی عوام سراپا احتجاج ہے۔ زینب کی والدہ نے نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئےکہا کہ میری بیٹی 8 سال کی نہیں بلکہ ساڑھے چھ سال کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ میں جب عمرے پر جانے لگی تو میں اس سے وعدہ کر رکے گئی تھی کہ اگلی مرتبہ تمہیں بھی اپنے ساتھ لے کر جاﺅں گی۔

میں اللہ کے گھر میں دعا کرتی رہی کہ اللہ مجھے صبر عنایت فرما لیکن مجھے یہ معلوم نہیں تھا کہ مجھے اپنی بچی کی موت پر صبر کرنا ہو گا۔ زینب کی والدہ نے میڈیا سے کہا کہ وعدہ کرتے ہو؟ کہ اس بار ہمیں اکیلا نہیں چھوڑو گے۔ قصور بارہ لاشیں اُٹھا چکا ہے اور یہ وہ لاشیں ہیں جو رپورٹ ہوئی ہیں۔ میری بچی کو گھر سے پانچ سو گز کے فاصلے سے اغوا کیا گیا اور پھر چند گھنٹوں کے بعد وہیں پھینک دیا گیا جہاں قصور بھر کا کچرا پھینکا جاتا ہے۔ زینب کی والدہ نے مزید کیا بات کی آپ بھی ملاحظہ کیجئیے:

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 12/01/2018 - 11:10:00

اس خبر پر آپ کی رائے‎

متعلقہ عنوان :