ڈیپوٹیشن افسربحالی کے خلاف کیس،
تازہ ترین : 1

ڈیپوٹیشن افسربحالی کے خلاف کیس،

جسٹس شوکت صدیقی کا چیئرمین سی ڈی اے پر اظہار برہمی شیخ صاحب تحصیلدار مرزا سعید سے کوئی اچھا بندہ نہیں ملا، عدالت کو آپ لوگوں کا بھی بوجھ اٹھانا پڑتا ہے‘ہماری بھی معلومات میں ہے اس نے کتنے پیسے لیے ،میں کچھ کیسز میں اس تحصیلدار کے خلاف آبزرویشن دے چکا ہوں‘ ہمیں آپ لوگوں کا بھی بوجھ اٹھانا پڑتا ہے، جسٹس شوکت صدیقی کے ریمارکس

ڈیپوٹیشن افسربحالی کے خلاف کیس،
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 دسمبر2017ء)اسلام آباد ہائی کورٹ میں سی ڈی اے کے ڈیپوٹیشن افسر کی جانب سے بحالی کے خلاف کیس کی سماعت پرمیئر اسلام آباد و چیئرمین سی ڈی اے شیخ انصر عدالت میں پیش ہوئے، جسٹس شوکت صدیقی نے چیئرمین سی ڈی اے پر اظہار برہمی کرتے ہوئے استفسار کیا کہ شیخ صاحب تحصیلدار مرزا سعید سے کوئی اچھا بندہ نہیں ملا، عدالت کو آپ لوگوں کا بھی بوجھ اٹھانا پڑتا ہی,ہماری بھی معلومات میں ہے اس نے کتنے پیسے لیے ،میں کچھ کیسز میں اس تحصیلدار کے خلاف آبزرویشن دے چکا ہوں, ہمیں آپ لوگوں کا بھی بوجھ اٹھانا پڑتا ہی, شیخ انصر نے تحصیلدار کو پہچاننے سے انکار کر دیا تو عدالت نے توسیع کا جواب مانگ لیا , گزشتہ روز اسلام ٓباد ہائی کورٹ کے حکم کے مطابق مئر و چئیر مین سی ڈی اے شیخ انصر عزیز عدالت میں پیش ہوئے تو جسٹس شوکت عزیز صدیقی نے تحصیلدار مرزا سعید کی تیعناتی پر اظہار برہمی کرتے ہوئے استفسار کیا کہ یہ وہ افسر ہے جو پنڈی کے علاقے کو بھی آئی سی ٹی ڈکلئیر کر دے گا لہذا ٓپ باتائین کہ بندے کے پروفائل کو دیکھے بغیر توسیع کیسے دے دی ۔

طارق فضل چوہدری کا دباؤ ہو گا کیونکہ آپ اس کی پارٹی کے ہیں,کسی جگہ پر ڈپٹی اسپیکر کا بندہ لگا ہوا ہے اورکسی جگہ پر طارق فضل چوہدی, ملک ابرار اور طلال چوہدری کا بندہ لگا ہوا ہے کیونکہ میں یہاں کا لوکل ہوں مجھے سب پتہ ہے ٹھیک ہے کہ آپ ان کی پارٹی کے ہیں مگر ایسا نہ کریں،پچھلے پانچ سال سے کہہ رہا ہوں کہ سی ڈی اے کی حاظری مکمل کر کے دیکھائیںجس پر شیخ انصر عزیز نے کہا کہ اس پر کام کر رہے ہیں جلد رپورٹ دیں گے ۔عدالت نے شیخ انصر سے استفسار کیا کہ 2500 تو وہ گھوسٹ ملازمین سامنے آئے جو چوہدی یاسین کے ہیں اسی طرح ابھی اور بھی بہت سے لوگوں کے بندے سامنے آئیں گی, ؂؂؂درخواست گزار کی جانب سے درخواست واپس لینے پر عدالت نے کیس نمٹا دیا۔
وقت اشاعت : 15/12/2017 - 15:37:27

اس خبر پر آپ کی رائے‎

Justice Shaukat Siddiqui's chairman against disclosure of depression Sheikh Sahib, Tehsildar Mirza Saeed, did not get a good servant. The court has to bear the burden of your people. We also know how much money he has taken, in some cases, I have given a reservation against this Tehreekhar. The burden has to be taken, the remarks of Justice Shaukat Siddiqui

Justice Shaukat Siddiqui, while hearing the case against the restoration of the case against the CDA depotant officer in the Islamabad High Court, was presented before the chairman of Islamabad and Chairman CDA Sheikh Anas. That Sheikh Sahib did not get a good slave from Tehsildar Mirza Saeed, the court had to bear the burden of your people. We also know how much money he has taken, in some cases, I have given a reservation against this Tehsildar. If the people had to bear their burden, Sheikh Anas refused to recognize Tehsildar, then the court responded from the extension. Justice Shaukat Aziz Siddiqui expressed his condolence on the subject of the Tehsildar Mirza Saeed while saying that he is the officer, according to the order of the Supreme Court of Islamabad High Court. Whoever ICT will also do to Pandhi area, therefore tell how to extend the extension without seeing the profile of the servant.