عمران خان کی عبوری ضمانت میں توسیع کردی گئی
تازہ ترین : 1
عمران خان کی عبوری ضمانت میں توسیع کردی گئی

عمران خان کی عبوری ضمانت میں توسیع کردی گئی

عمران خان نے مقدمات میں شامل دہشت گردی کی دفعات کو چیلنج کردیں ،ْکیس سیشن کورٹ بھجوانے کی استدعا فیض آباد دھرنے میں مقدمات ختم کرنے کا حوالہ دیاگیا ،ْبابر اعوان دھرنے والوں کیخلاف مقدمات ختم نہیں ہوئے ملزم ابھی تک ضمانتیں کروا رہے ہیں ،ْجج کے ریمارکس بابراعوان نے حکومت اور تحریک لبیک کے معاہدے کی شقیں پڑھ کر عدالت کو سنائیں

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 دسمبر2017ء)اسلام آباد کی انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی عبوری ضمانت میں گیارہ دسمبر تک توسیع کردی جبکہ چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے مقدمات میں شامل دہشت گردی کی دفعات کو چیلنج کرتے ہوئے کیس سیشن کورٹ بھجوانے کی استدعا کی ہے۔ جمعرات کو انسداد دہشت گردی عدالت کے جج شاہ رخ ارجمند نے پی ٹی وی، پارلیمنٹ حملہ، ایس ایس پی تشدد اور پولیس اسٹیشن سے زبردستی کارکنوں کے چھڑانے پرعمران خان کیخلاف درج چار مقدمات کی سماعت کی۔

چیئرمین تحریک انصاف عمران خان عدالت میں پیش ہوئے، عمران خان کے وکیل بابراعوان ایڈووکیٹ نے دلائل دیتے ہوئے مقدمے میں انسداد دہشت گردی ایکٹ کی دفعات کو چیلنج کیا اور کہا کہ کیا شہریوں کا جمہوری حقوق کیلئے جدوجہد کرنا دہشت گردی کے زمرے میں نہیں آتا ہے۔بابراعوان کی طرف سے عدالت کے دائرہ کار کو چیلنج کرتے ہوئے فیض آباد دھرنے میں مقدمات ختم کرنے کا حوالہ دیاگیاجس پر جج شاہ رخ ارجمند نے ریمارکس دیئے کہ دھرنے والوں کیخلاف مقدمات ختم نہیں ہوئے ملزم ابھی تک ضمانتیں کروا رہے ہیں۔

بابراعوان نے حکومت اور تحریک لبیک کے معاہدے کی شقیں پڑھ کر عدالت کو سنائیں اور کہا کہ قانون ہر شہری کیساتھ یکساں سلوک کرنے کا حکم دیتا ہے۔ عدالت میں سرکاری پراسیکیوٹر نے دلائل دئیے کہ عمران خان نے اپنے کارکنوں کو کہا کہ آئی جی کو مارو اور وزیراعظم ہائوس پر قبضہ کرلو۔عمران خان کیخلاف اپنے کارکنوں کو اکسانے کے ٹھوس شواہد موجود ہیں اور ان کیخلاف انسداد دہشت گردی ایکٹ کی دفعہ دس کے تحت کارروائی ہونی چاہئے۔ بعد ازاں عدالت نے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی عبوری ضمانت میں گیارہ دسمبر تک توسیع کرتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی ۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 07/12/2017 - 12:28:06

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں