سندھ ہائیکورٹ؛ کراچی میں پولیس مقابلہ جعلی قرار
تازہ ترین : 1
سندھ ہائیکورٹ؛ کراچی میں پولیس مقابلہ جعلی قرار

سندھ ہائیکورٹ؛ کراچی میں پولیس مقابلہ جعلی قرار

ْاگر جدید ہتھیاروں سے فائرنگ ہوئی تو کیا کوئی اہلکار یا شہری بھی زخمی ہوا ، سندھ ہائیکورٹ

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 اکتوبر2017ء)سندھ ہائیکورٹ نے شہر قائد میں ایک پولیس مقابلے کو مشکوک قرار دیتے ہوئے ملزمان کو رہا کرنے کا حکم دے دیاہے۔پیرکوسندھ ہائیکورٹ نے محمودآباد میں ہونے والے پولیس مقابلے کو مشکوک قرار دیتے ہوئے گرفتار ملزمان کو رہا کرنے کا حکم دیا۔ عدالت نے مبینہ مقابلے میں گرفتار ملزم سہیل سیلم اور اویس اختر کی 3،3 لاکھ روپے کے مچلکوں کے عوض ضمانت منظور کرلی اور انہیں جیل سے رہا کرنے کا حکم دیا۔

دوران سماعت جسٹس نعمت اللہ نے کہا کہ پولیس اور پراسیکیوشن کی جانب سے پیش کیے جانے والے ثبوت اور شواہد من گھڑت اور غیر یقینی ہیں، شواہد سے لگتا ہے کہ پولیس مقابلہ جعلی تھا اور ملزمان سے موقع پر کچھ برآمد بھی نہیں ہوا، اگر جدید ہتھیاروں سے فائرنگ ہوئی تو کیا کوئی پولیس اہلکار یا شہری بھی زخمی ہوا ۔پولیس نے عدالت کے روبرو کہا کہ ملزم سہیل سلیم اور اویس اختر کو 17جولائی کو مقابلے کے بعد گرفتار کیا گیا اور ملزمان کے خلاف تھانہ ڈیفنس میں مقدمہ درج ہے۔ واضح رہے کہ اس سے قبل انسدادِ دہشت گردی کی عدالت نے ملزمان کی درخواستِ ضمانت مسترد کردی تھی جس کے بعد انہوں نے سندھ ہائی کورٹ میں درخواست دائر کی۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 23/10/2017 - 12:54:56

اپنی رائے کا اظہار کریں