اٹلی کے قصبے میں رہنے کے لیے حکومت کا 1500یوروتک دینے کا اعلان
تازہ ترین : 1
اٹلی کے قصبے میں رہنے کے لیے حکومت کا 1500یوروتک دینے کا اعلان

اٹلی کے قصبے میں رہنے کے لیے حکومت کا 1500یوروتک دینے کا اعلان

اٹلی (اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔21اکتوبر۔2017ء) اٹلی کے صوبے Puglia کے ایک قصبے کینڈیلا کے میئر نے وہاں کی کم ہوتی ہوئی آبادی سے پریشان ہوکر اعلان کیا ہے کہ قصبے میں سکونت اختیار کرنے والوں کو شہری حکومت معاوضہ دے گی۔ 8 ہزار سے زائد افرادپر مشتمل اس قصبے کی آبادی محض 2700 رہ گئی ہے۔سر سبز پہاڑوں اور جنگل سے گھرے اس قصبے میں اگر کوئی غیرملکی بسنا چاہے گا تو شہری حکومت تنہا فرد کو 800 یورو ، جوڑے کو 1200 یورو ، تین افراد کے خاندان کو 1500 یورو جبکہ چار افراد کے خاندان کو دو ہزار یورو دے گی۔

کینڈیلا کے میئر نکولا گاتا کے مطابق ہم دن رات اس جذبے اور عزم کے ساتھ کام کررہے ہیں کہ اس قصبے کی ماضی کی رونقوں کو واپس لائیں گے، 1960 کی دہائی میں سیاح اس جگہ کو لٹل نیپلز کہتے تھے اور یہاں کی گلیاں سیاحوں، تاجروں اور دیگر افراد سے بھری ہوتی تھیں۔مگر اب یہاں کے نوجوان ملازمت اور اچھے مواقعوں کے لیے دیگر جگہوں پر منتقل ہو رہے ہیں اور اس بات کے امکانات ہیں کہ یہ اٹلی کے لاتعداد گھوسٹ ٹاﺅنز میں سے ایک بن جائے گا، جس سے بچنے کے لیے یہ حیران کن اعلان کیا گیا ہے۔

اگر کوئی وہاں بسنے کے لیے تیار ہو تو وہ مستقل ہونی چاہیے، جس کے لیے ایک گھر کرائے پر لینا ہوگا جبکہ ملازمت بھی کرنا ہوگی۔حکام کے مطابق یہ ایک پرسکون مقام ہے، جہاں لوگوں کا طرز زندگی سادہ ہے، یہاں کوئی ہجوم نہیں اور گھومنے پھرنے کے لیے متعدد مقامات ہیں۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 21/10/2017 - 12:08:42

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں