عمران خان اور جہانگیرترین کی نااہلی کے مقدمات گہرائی سے دیکھ رہے ہیں ،ْ
تازہ ترین : 1
عمران خان اور جہانگیرترین کی نااہلی کے مقدمات گہرائی سے دیکھ رہے ہیں ..

عمران خان اور جہانگیرترین کی نااہلی کے مقدمات گہرائی سے دیکھ رہے ہیں ،ْ

فیصلہ بھی ایک ساتھ دینگے ،ْ چیف جسٹس

اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اکتوبر2017ء)سپریم کورٹ کے چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے سپریم کورٹ میں عمران خان اور جہانگیر ترین نااہلی کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے ہیں کہ دونوں مقدمات کو گہرائی سیدیکھ رہے ہیں اور فیصلہ بھی ایک ساتھ دیں گے۔ بدھ کو چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں تین رکنی بنچ عمران خان اور جہانگیرترین نااہلی کیس کی سماعت کی ۔

نااہلی کی درخواست مسلم لیگ (ن)کے رہنما حنیف عباسی نے دائر کررکھی ہے۔ جہانگیر ترین کے وکیل سکندر بشیر جبکہ درخواست گزار کے وکیل اکرم شیخ عدالت میں پیش ہوئے تو سماعت کے آغاز پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ گہرائی سے دونوں مقدمات کو دیکھ رہے ہیں،عمران خان اور جہانگیر ترین کیس کا فیصلہ ایک ساتھ کریں گے۔چیف جسٹس نے بتایا کہ 26 اکتوبر کو سارک کانفرنس کے لئے سری لنکا جانا ہے جس پر اکرم شیخ نے کہا کہ عمران خان کی درخواست پر جواب دینا چاہتا ہوں۔

چیف جسٹس نے وکیل جہانگیر ترین سے استفسار کیا کہ کمپنی کے شیئرز کی خریداری کیلئے کتنی رقم خرچ ہوئی ہم جاننا چاہتے ہیں کہ شیئرز کے لیے کتنی رقم لگائی گئی یہ بھی بتائیں کہ اللہ یار نے کتنی رقم کے شیئر خریدے،جس پر وکیل نے بتایا کہ یہ غلط ہے کہ اللہ یار اور حاجی خان باورچی اور مالی ہیں یہ دونوں افراد جہانگیرترین کے پرانے ملازم ہیں، اللہ یار نے 13ملین کے شیئر خرید کر 46 میں فروخت کیے۔گزشتہ روز سماعت پر سپریم کورٹ جہانگیر ترین کی جانب سے اراضی کی ملکیت سے متعلق جمع کرائی گئی دستاویزات پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ صرف لیز معاہدے سے حقائق واضح نہیں ہوتے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 18/10/2017 - 16:07:32

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں