بالائی خلاء کو ہتھیاروں کی دوڑ اور تصادم کا علاقہ بننے سے بچانے کیلئے جامع اقدامات ..
تازہ ترین : 1
بالائی خلاء کو ہتھیاروں کی دوڑ اور تصادم کا علاقہ بننے سے بچانے کیلئے ..

بالائی خلاء کو ہتھیاروں کی دوڑ اور تصادم کا علاقہ بننے سے بچانے کیلئے جامع اقدامات کرنا ہوں گے

پاکستان کے مندوب فرخ عامل کا اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کی تخفیف اسلحہ و سلامتی کمیٹی کے اجلاس سے خطاب

اقوام متحدہ ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اکتوبر2017ء) پاکستان نے بالائی خلاء کو ہتھیاروں سے پاک کرنے اور اسے تحقیقی اور پرامن مقاصد کیلئے استعال کرنے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔ یہ بات جینیوامیں اقوام متحدہ میں پاکستان کے مندوب فرخ عامل نے جنرل اسمبلی کی تخفیف اسلحہ و سلامتی کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہاکہ بالائی خلاء پر انسانی انحصار اوراس کے استعمال میں مسلسل اضافہ ہورہاہے ، ایسے حالات میں بالائی خلاء کے عسکری استعمال کے خطرات بڑھ رہے ہیں، بالائی خلاء کو ہتھیاروں کی دوڑ اور تصادم کا علاقہ بننے سے بچانے کیلئے جامع اقدامات کرنا ہوں گے کیونکہ یہ بنی نوع انسانیت کا مشترکہ ورثہ ہے۔

پاکستانی مندوب نے کہاکہ اس وقت ٹیکنالوجی میں برتری کی وجہ سے چند ممالک کی بالائی خلاء میں اجارہ داری ہے تاہم یہ صورتحال ہمیشہ نہیں رہ سکتی، دیگر ممالک بھی بالائی خلاء کی تسخیر اورتحقیق کے مقاصد کیلئے سامنے آرہے ہیں ، اس علاقہ میں ہتھیاروں کے پھیلائو کو روکنے کی ذمہ داری ترقی پذیر ممالک پر عائد نہیں ہوتی اور نہ ہی ترقی پذیر ممالک پرامن مقاصد کیلئے بالائی خلاء کے استعمال پر پابندیوں کو قبول کریں گے۔ پاکستانی مندوب نے کہاکہ اگرچہ بالائی خلاء میں جوہری اوربڑے پیمانے پر تباہی پھیلانے والے ہتھیاروں کو ذخیرہ نہیں کیا جاسکتا تاہم دیگر نوعیت کی ہتھیاروں کو یہاں رکھنے کے حوالے سے خاموشی ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان اس ضمن میں معاہدہ کے مسودے کی حمایت کرتا ہے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 18/10/2017 - 12:36:37

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں