کرالہ گنڈ میں بھارتی پولیس نے دو نوجوانو ں کو کرکٹ میچ کے دوران نعرہ بازی کرنے ..
تازہ ترین : 1

کرالہ گنڈ میں بھارتی پولیس نے دو نوجوانو ں کو کرکٹ میچ کے دوران نعرہ بازی کرنے پر گرفتار کر لیا

اعجاز اور امتیاز کی گرفتاری کے بعد نوجوانوں میں تشویش کی لہر دو ڑ گئی اور وہ پولیس کی گرفتاری سے بچنے کے لئے روپوش ہوگئے

سرینگر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 اگست2017ء) مقبوضہ کشمیر میں ضلع کپواڑہ کے علاقے کرالہ گنڈ میں بھارتی پولیس نے دو نوجوانو ں کو کرکٹ میچ کے دوران نعرہ بازی کرنے پر گرفتار کر لیاہے جس کے خلاف علاقے میں زبردست غم وغصہ پایا جاتاہے۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق کرالہ گنڈ کے لوگوں نے صحافیوں کو بتایاکہ ضلع کے علاقے ہانگہ میں کرالہ گنڈ کی ٹیم اور ایک اور ٹیم کے درمیان کرکٹ میچ تھا جوکرالہ گنڈ کی ٹیم نے جیتا۔

مقامی لوگو ں کے مطابق میچ جیتنے کی خوشی میں تماشائیوں نے اسلام اور آ زادی کے حق میں نعرہ بازی کی اور پرامن طور پر وہاں سے چلے گئے۔ لوگوں کے مطابق بھارتی پولیس نے شیر خان سپورٹس کلب کرالہ گنڈ کے کیپٹن اعجاز احمد خواجہ اور دوسرے کھلاڑی امتیاز احمد خواجہ کو گرفتار کر کے سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا جبکہ دوسرے کھلاڑیو ں کی تلاش جاری ہے۔

اعجاز اور امتیاز کی گرفتاری کے بعد نوجوانوں میں تشویش کی لہر دو ڑ گئی ہے اور وہ پولیس کی گرفتاری سے بچنے کے لئے روپوش ہوگئے ہیں۔ لوگو ں نے اس کارروائی کے خلاف سخت غم و غصے کااظہار کرتے ہوئے مطالبہ کیا کہ نوجوانو ں کی گرفتاری سے گریز کیا جائے۔ ایک پولیس آفیسر نے اعجاز اورامتیاز کی گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے ملک دشمن نعرے لگائے تھے جس کی تحقیقات جاری ہے۔

دریں اثناء بھارتی پولیس نے ویری ناگ کے علاقے کوکا گنڈ سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان ارشاد احمدکو کالے قانون پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت گرفتارکرکے کھٹوعہ جیل بھیج دیا ہے۔ مزدوری کرنے والے 22سالہ ارشاد احمد کی والدہ تاجہ بیگم نے صحافیوں کو بتایاکہ اٴْن کا بیٹا جرم بے گناہی کی سزا کاٹ رہا ہے۔تاجہ بیگم نے کہاکہ پولیس نے گذشتہ دو برسوں سے ان کے بیٹے کا قافیہ حیات تنگ کررکھاتھا اورآئے روز چھاپے اور تھانے پر طلبی ایک معمول بن گیا تھا ۔ انہوں نے کہاکہ اب ان کو سیفٹی ایکٹ کے تحت کٹھوعہ جیل منتقل کیاگیاہے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 13/08/2017 - 13:10:23

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں