وفاقی وزیر احسن اقبال کا سی پیک یونیورسٹی الائنس اور بزنس سکولز کنسورشیم کے قیام ..
تازہ ترین : 1
وفاقی وزیر احسن اقبال کا سی پیک یونیورسٹی الائنس اور بزنس سکولز کنسورشیم ..

وفاقی وزیر احسن اقبال کا سی پیک یونیورسٹی الائنس اور بزنس سکولز کنسورشیم کے قیام کا خیرمقدم

موجودہ حکومت کی ترجیحات میں اعلیٰ تعلیم کا فروغ سرفہرست ہے، ملکی ترقی کیلئے ناگزیر سی پیک منصوبہ پاکستان اور چین کے مابین اعلیٰ تعلیم میں تعاون کے مواقع بھی فراہم کرتا ہے وفاقی وزیر پروفیسر احسن اقبال کا پاک چائنا فورم کی افتتاحی تقریب سے خطاب

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 جولائی2017ء) وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی، ترقی و اصلاحات پروفیسر احسن اقبال نے پاک۔چین اقتصادی راہداری منصوبے کے فوائد سے مستفید ہونے کیلئے ایچ ای سی کے تحت سی پیک یونیورسٹی الائنس اور بزنس سکولز کنسورشیم کے قیام کا خیرمقدم کیا ہے۔ ایئر یونیورسٹی اسلام آباد میں ہائر ایجوکیشن کمیشن آف پاکستان اور چائنہ ایسوسی ایشن آف ہائیر ایجوکیشن کے باہمی اشتراک سے منعقدہ پاک چائنا فورم کی افتتاحی تقریب سے بطور مہمانِ خصوصی اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کی ترجیحات میں اعلیٰ تعلیم کا فروغ سرفہرست ہے۔

انہوں نے چینی ماہرین تعلیم کو پاکستان آمد پر خوش آمدید کہتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت چین کے ساتھ تعلیمی شعبہ میں تعاون کو مستحکم کرنے کی خواہاں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان کو ترقی و خوشحالی کی راہ پر گامزن رکھنے کیلئے اعلیٰ تعلیم کا حصول ضروری ہے اور اس حوالہ سے ملکی ترقی کیلئے ناگزیر سی پیک منصوبہ پاکستان اور چین کے مابین اعلیٰ تعلیم میں تعاون کے مواقع بھی فراہم کرتا ہے۔

میزبان ایئر یونیورسٹی کے وائس چانسلر ایئر وائس مارشل (ر) فائز امیر نے اعلیٰ تعلیم تک یکساں رسائی کے مواقع اور معیارِ تعلیم کے موضوع پر منعقدہ اجلاس کے شرکاء کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ ایئر یونیورسٹی سی پیک کے تحت اعلیٰ تعلیم یافتہ افرادی قوت فراہم کرنے کیلئے پرعزم ہے۔ اس موقع پر پاکستان ہائیر ایجوکیشن کمیشن اور چائنیز ہائر ایجوکیشن کے اعلیٰ افسران بھی موجود تھے۔

چینی مندوبین کا سی پیک کے تناظر میں دوطرفہ تعلیمی تعاون مستحکم کرنے کیلئے مختلف تجاویز کا تبادلہ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ چین کی ترقی کا راز عوام کو اعلیٰ معیاری تعلیم کی یکساں فراہمی میں پنہاں ہے۔ ایئر یونیورسٹی میں منعقدہ پاک چین فورم میں دونوں ممالک سے تعلق رکھنے والے ماہرین تعلیم اور طلباء و طالبات کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 17/07/2017 - 19:08:53

اپنی رائے کا اظہار کریں