حتمی فیصلہ آنے کے بعد جشن منائینگے یا حملہ کی صورت میں سپریم کورٹ کے ساتھ کھڑے ..
تازہ ترین : 1

حتمی فیصلہ آنے کے بعد جشن منائینگے یا حملہ کی صورت میں سپریم کورٹ کے ساتھ کھڑے ہونگے ،ْ عمران خان

جے آئی ٹی نے زبردست کام کیا جس کی امید نہیں تھی ،ْنواز شریف کو نریندر مودی ،ْ ڈونلڈ ٹرمپ اور قطری شہزادہ نہیں بچا سکتے ،ْ ادارے تباہ کر نے کی کوشش کی گئی تو عوام سڑکوں پر نکلیں گے ،ْاب نواز شریف جدہ نہیں اڈیالہ جیل جائینگے، چیئرمین پی ٹی آئی کا ور کرز کنونشن سے خطاب

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 جولائی2017ء)پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہاہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے حتمی فیصلہ آنے کے بعد جشن منائیں گے یا حملہ ہونے کی صورت میں عدالت کے ساتھ کھڑے ہونگے ،ْجے آئی ٹی نے زبردست کام کیا جس کی امید نہیں تھی ،ْنواز شریف کو نریندر مودی ،ْ ڈونلڈ ٹرمپ اور قطری شہزادہ نہیں بچا سکتے ،ْ ادارے تباہ کر نے کی کوشش کی گئی تو عوام سڑکوں پر نکلیں گے ،ْاب نواز شریف جدہ نہیں اڈیالہ جیل جائینگے ۔

اتوار کو ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہاکہ چند دنوں بعد یا تو خوشیاں منانے کیلئے دعوت دوں گا یا پھر انصاف کا راستہ روکنے پر انصاف قائم کرنے کیلئے دعوت دوں گا، کارکنوں کو نظر آرہا ہے کہ تبدیلی آرہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میرا مقابلہ پاکستان کے سیاسی مافیا کے خلاف تھا انہوںنے کہاکہ قوم نوازشریف کو معصوم اور زرداری کو چور سمجھتی تھی تاہم جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی) نے وہ کام کردکھایا جو تاریخ میں آج تک کوئی نہ کرسکا۔

عمران خان نے کہاکہ جے آئی ٹی کے 6 ارکان نے 60 دن میں اتنا زبردست کام کیا ہے جس کی مجھے بھی امید نہیں تھی لیکن انھیں خراج تحسین پیش کرنے کے بجائے مسلم لیگ نواز اس کو سازش قرار دے رہی ہے۔جے آئی ٹی کی تعریف کرتے ہوئے انہوںنے کہاکہ جے آئی ٹی نے منی لانڈرنگ کا نیٹ ورک بے نقاب کیا اور جے آئی ٹی اس لیے کامیاب ہوئی کیونکہ اس کے اوپر سپریم کورٹ تھی۔

چیئرمین تحریک انصاف نے دعویٰ کیا کہ حکمران جے آئی ٹی کے بعد اب فوج اور عدلیہ پرحملہ کریں گے اس لیے کارکن تیارر ہیں ہم یا تو اسلام آباد میں خوشیاں منائیں گا یاپھر سڑکوں پر آئیں گے۔انہوںنے کہاکہ نوازشریف کو اب نریندر مودی، ڈونلڈ ٹرمپ اور قطری شہزادہ نہیں بچاسکتے، ادارے تباہ کرنے کی کوشش کی گئی تو عوام سڑکوں پر نکلیں گے جس کی تاریخ نہیں ملے گی۔

عمران خان نے کہا کہ نوازشریف کو چھپنے کی جگہ نہیں ملے گی اور وہ جدہ نہیں بلکہ اڈیالہ جیل جائیں گے۔حکمرانوں پر کرپشن کے الزامات عائد کرتے ہوئے عمران خان نے کہاکہ باہر کمپنیاں بنا کر یہاں سے مختلف منصوبوں کا کمیشن لے کر پیسے کو ملک سے باہر بھیجا اور وہاں سے واپس پاکستان بھیجتے تھے۔انہوںنے کہاکہ یہاں بڑے پراجیکٹ موٹروے، یلو کیب اسکیم، اورنج ٹرین اور میٹرو جیسے منصوبے بنائے اور ان سے کمیشن باہر بھیجوا دیا گیا اور وہاں کمپنیوں میں ڈال دئیے جہاں ان کے بچے بیٹھے ہوئے تھے، ان کے بیٹے اور اسحق ڈار کے بیٹوں کو وہاں بیٹھا دیا۔

انہوںنے کہاکہ ہل میٹل کمپنی کے ذریعے چار برسوں میں نواز شریف کیلئے 117 کروڑ روپے پاکستان بھیجے گئے اور بیرون ملک سے کمپنی کے نام پر پیسا ملک میں واپس آتا تھا۔عمران خان نے کہا کہ انھوں نے 1992 میں اکنامک ریفارم ایکٹ کے نام سے قانون بنایا اور یہ قانون اپنی منی لانڈرنگ کو تحفظ دینے کیلئے بنایا تھا۔ انہوں نے کہا کہ جو ان کی چوری چھپاتا یا قانون توڑتا ہے تو وہ ٹھیک ہے تاہم جو ان کے خلاف کھڑا ہو وہ سازش ہے تاہم سازش یہ ہے کہ شریف خاندان اپنے ذاتی مفاد کو بچانے کیلئے پاکستان کو تباہ کررہا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ ملک بمباری سے نہیں بلکہ ادارے تباہ کرنے سے تباہ ہوتا ہے، یہ ملک کے غدار ہیں، ان سے بڑی غداری کسی نے نہیں کی، یہ پیسے چوری کرکے ملک سے باہر لیکر جارہے ہیں جب کہ جے آئی ٹی نے وہ کام کیا کہ جو ہم کبھی تصور بھی نہیں کرسکتے تھے ،ْاس کام کی مجھے بھی امید نہیں تھی۔ انہوںنے کہاکہ یہ جواب دینے کے بجائے کہہ رہے ہیں کہ جمہویت کے خلاف سازش ہورہی ہے جبکہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ یہودی اور بھارتی ان کے خلاف سازش کررہے ہیں۔

عمران خان نے کہا کہ اگر نواز شریف کا خیال ہے کہ وہ صرف اپنی کرپشن بچانے کیلئے سپریم کورٹ اور فوج کو تباہ کریں گے تو نواز شریف کسی غلط فہمی میں نہ رہیں، میں وعدہ کرتا ہوں کہ پاکستان کی تاریخ میں کبھی اتنی عوام نہیں نکلی جتنی اب انہیں ملک سے نکالنے کے لیے سڑکوں پر نکلے گی۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 16/07/2017 - 20:50:10

اپنی رائے کا اظہار کریں