مقدس مقامات کو جارحیت کا نشانہ بنانا ناقابل برداشت ہے جس کے خلاف شدید ردّعمل سامنے ..
تازہ ترین : 1

مقدس مقامات کو جارحیت کا نشانہ بنانا ناقابل برداشت ہے جس کے خلاف شدید ردّعمل سامنے آسکتا ہے‘ سید علی گیلانی

سرینگر ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 جولائی2017ء) مقبوضہ کشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے اسلام آبادکے علاقے ریشی صاحب میں جامع مسجد کی بے حرمتی ، مسجد کے اندر گُھس کر سامان کی توڑ پھوڑ ، نمازیوں کو تشدد کا نشانہ بنانے اور کم سن بچوں کو گرفتار کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مقدس مقامات کو جارحیت کا نشانہ بنانا ناقابل برداشت ہے اور اس کے خلاف شدید ردّعمل سامنے آسکتا ہے۔

کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق سید علی گیلانی نے سرینگر سے جاری ایک بیان میں واقعے کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کرانے اور مجرموں کو سزا دینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ جموں وکشمیر میں نہ صرف لوگوں کے جان ومال اور عزت خطرات سے دوچار ہیں بلکہ ان کے مذہبی شعائر اور مساجد بھی غیر محفوظ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کٹھ پتلی انتظامیہ کی پالیسیاں حالات کو دن بدن مخدوش بنارہی ہیں اور ریاست میں جاری سیاسی غیر یقینیت اور عدمِ استحکام کی صورتحال میں اضافہ ہورہا ہے۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ علاقے میں عام لوگوں کی زندگیاں اجیرن بنادی گئی ہیں اور اُن کو دیوار کے ساتھ لگایا جارہا ہے۔ بھارتی فورسز کو بے لگام چھوڑا گیا ہے اور جوابدہی کا کوئی نظام قائم نہیں ہے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 16/07/2017 - 19:40:12

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں