بلاول بھٹو زرداری نے ایک مرتبہ پھر وزیر اعظم سے استعفے کا مطالبہ کردیا
تازہ ترین : 1
بلاول بھٹو زرداری نے ایک مرتبہ پھر وزیر اعظم سے استعفے کا مطالبہ کردیا

بلاول بھٹو زرداری نے ایک مرتبہ پھر وزیر اعظم سے استعفے کا مطالبہ کردیا

ملک میں دو قسم کے قانون رائج ‘ ایک شریفوں اور دوسرا غریبوں کیلئے ہے ‘ ہمیں دو قانون اور دوپاکستان نہیں چاہئیں،شریف خاندان جتنی بھی کرپشن اور لوٹ مار کریں انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ‘ سانحہ ماڈل ٹائون میں سرعام لوگوں کو قتل کیا گیا مگر کوئی عدالت اور کوئی جے آئی ٹی ان کو مجرم نہیں ٹھہراتی پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا منڈی شاہ جیونہ میں عوامی جلسے سے خطاب

منڈی شاہ جیونہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 اپریل2017ء)پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے ایک مرتبہ پھر وزیر اعظم سے استعفے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہاہے کہ ملک میں دو قسم کے قانون رائج ہیں ‘ ایک قانون شریفوں کیلئے ہے اور دوسرا قانون اس ملک کے غریبوں اور پیپلز پارٹی کیلئے ہے ‘ ہمیں دو قانون اور دوپاکستان نہیں چاہئیں،شریف خاندان جتنی بھی کرپشن اور لوٹ مار کریں انہیں کوئی پوچھنے والا نہیں ہے ‘ سانحہ ماڈل ٹائون میں سرعام لوگوں کو قتل کیا گیا مگر کوئی عدالت اور کوئی جے آئی ٹی ان کو مجرم نہیں ٹھہراتی۔

وہ جمعہ کو جھنگ کے علاقے منڈی شاہ جیونہ میں عوامی جلسے سے خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف کے خلاف بنائی گئی نئی جے آئی ٹی جس میں ان کے آفیسرز مقرر ہونگے ان سے یہ قوم کیا امید رکھے۔ میں پوچھتا ہوں آخر کب تک اس ملک میں دو قانون چلیں گے۔ ایک وزیر اعظم کو آپ چار تین کے فیصلے سے پھانسی پر چڑھا دیتے ہو اور دوسرے وزیر اعظم کو تین دو کے فیصلے سے بری کر دیا جاتا ہے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ محترمہ بے نظیر بھٹو کی حکومت کو ختم کیا گیا اور شریفوں کی حکومت کو بحال کیا گیا۔ یہ شریف عدالت پر حملہ کر دیں تو بھی بچ جائیں جبکہ پیپلز پارٹی کے وزیر اعظم کو ایک خط نہ لکھنے پر نااہل کر دیا جاتا ہے۔ چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ میں نوجوانوں سے پوچھتا ہوں کہ آپ اس دو قسم کے قانون کو مانتے ہو جس میں طاقتور کے سامنے گردن جھکا دی جائے اور کمزور کی گردن اڑا دی جائے۔

ہمیں ددو پاکستان چاہئیں اور نہ ہی دو قانون ۔ ہمیں ایک پاکستان اور ایک قانون چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ہم جدوجہد کر رہے ہیں ایسے پاکستان کی جس میں غریب اور امیر کیلئے ایک ہی قانون ہو۔ میاں صاحب آپ مکمل طور پر بری نہیں ہوئے دو سینئر ججوں نے آپ کو ڈس کوالیفائی کر دیا۔ اس لئے اگر آپ کو تھوڑی سی بھی شرم ہے تو فوری طور پر استعفیٰ دیدیں کیونکہ عوام کی عدالت سے بھی پانامہ کیس ‘ بے روزگاری ‘ لوڈشیڈنگ پر فیصلہ اپ کے خلاف دیدیا ہے۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ اس ملک کے کسان نے بھی نواز شریف کے خلاف فیصلہ دیا ہے۔ ملک میں دو قسم کے قانون رائج ہیں ایک قانون شریفوں کیلئے دوسرا اس ملک کے غریب عوام کیلئے ہے۔ انہوں نے کہا کہ شریف خاندان جتنی بھی کرپشن اور لوٹ مار کریں مگر انہیں پوچھنے والا کوئی نہیں ہے۔ سانحہ ماڈل ٹائون میں سرعام لوگوں کو قتل کیا گیا مگر کوئی عدالت اور کوئی جے آئی ٹی ان کو مجرم نہیں ٹھہراتی۔ …(رانا)
وقت اشاعت : 21/04/2017 - 21:10:52

اپنی رائے کا اظہار کریں