ایک ماہ قبل مجھے بھتےکی کال آئی،تعارف کروانےپران کوپتاچل گیا،جسٹس دوست محمد
تازہ ترین : 1
ایک ماہ قبل مجھے بھتےکی کال آئی،تعارف کروانےپران کوپتاچل گیا،جسٹس ..

ایک ماہ قبل مجھے بھتےکی کال آئی،تعارف کروانےپران کوپتاچل گیا،جسٹس دوست محمد

بھتےکی ادائیگی جلال آبادکے قریب ایک گاؤں میں ہوتی ہے، دہشتگردوں کو50فیصدفنڈنگ منشیات سے ہوتی ہے۔سپریم کورٹ کے جسٹس دوست محمد کادوران سماعت انکشاف

اسلام آباد(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین۔17 فروری2017ء): سپریم کورٹ کے جسٹس دوست محمدنے منشیات اسمگلرزکیس کی سماعت کے دوران انکشاف کیاہے کہ ایک ماہ قبل مجھے بھتے کی کال آئی، کہاگیا کہ نہ پیسے آئے نہ آپ آئے،ہم بندے بھیج رہے ہیں،جب تعارف کراوانے کاکہاتوان کوپتاچل گیاکہ غلط نمبرڈائل کردیاہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق جسٹس دوست محمدنے کہا کہ مالدارافرادسے بھتہ وصول کیاجاتاہے۔بھتے کی ادائیگی جلال آبادکے قریب ایک گاؤں میں ہوتی ہے۔ دہشتگردوں کو50فیصدفنڈنگ منشیات سے ہوتی ہے۔جسٹس دوست محمدکی سربراہی میں 3رکنی بنچ نے کیس کی سماعت کرتے ہوئے منشیات اسمگلرزکی عمرقید کی اپیلیں مستردکردی ہیں۔
اس خبر نوں پنجابی وچ پڑھو
وقت اشاعت : 17/02/2017 - 16:07:11

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں