کراچی میں دو لڑکیوں نے مل کر چھیڑنے والے لڑکے کی دھلائی کر دی
تازہ ترین : 1
کراچی میں دو لڑکیوں نے مل کر چھیڑنے والے لڑکے کی دھلائی کر دی

کراچی میں دو لڑکیوں نے مل کر چھیڑنے والے لڑکے کی دھلائی کر دی

کراچی (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 17 فروری 2017ء): کراچی کے علاقہ طارق روڈ پر جاتے ہوئے کراچی کی رہائشی دو لڑکیوں میں سے ایک کو وہاں موجود ایک نوجوان لڑکے نے ہراساں کیا ۔ سوشل میڈیا پر جاری ویڈیو پیغام میں متاثرہ لڑکی 19 سالہ زویا خان نے بتایاکہ ہم اپنے گھر سے نکلے ہی تھے کہ پیچھے سے آنے والے ایک لڑکے نے مجھے بُری طرح ہراساں کیا ، اس کا اتنا کرنا تھا کہ میں نے اس کے پیچھے بھاگنے کی کوشش کی لیکن میرے ہاتھ میں اتنا سامان ہونے کی وجہ سےمیں ایسا نہیں کر سکی اور میں نے چلانا شروع کر دیا ۔

میرے شور مچانے سے پاس موجود لوگ اکٹھا ہو گئے ۔ اتنے میں میں نے دیکھا کہ میری 15 سالہ بہن زارا خان اس لڑکے کے پیچھے بھاگ رہی ہے۔ میں نے رُک کر اس کا انتظار کیا اور کچھ دیر انتظار کرنے کے بعد میں بھی زارا کے پیچھے پیچھے بھاگ گئی ۔ ایک جگہ پہنچ کر میں نے دیکھا کہ بیس سے پچیس کے قریب لوگ اکٹھا ہو کر اس لڑکے کو بُری طرح مار رہے تھے جن میں سب سے آگے میری بہن تھی ۔

زویا نےبتایا کہ میرے ساتھ ایسا پہلی مرتبہ نہیں ہوا بلکہ میں نے پہلی مرتبہ اسے سوشل میڈیا پر ڈالنے کا سوچا۔ میں نےسوچا کہ جب یہ لوگ باز نہیں آتے تو ہمیں بھی ان کے خلاف آواز اٹھانے سے باز نہیں آنا چاہئیے اوریہی سوچ کر میں نےسوشل میڈیا پر تمام ترواقعہ بیان کر دیا۔ زویا نے بتایا کہ ہمارے اہل خانہ نے بھی اس معاملے پر ہمیں بہت سپورٹ کیا ۔

شروع میں میرے والد کو اس پر اعتراض تھا لیکن پھر انہوں نے اس بات پر فخر محسوس کیا کہ ان کی بیٹیوں نے اس کے خلاف آواز اٹھائی۔ زویا کا کہنا ہے کہ ہمیں دوست احباب اور اہل خانہ کی جانب سے فون کالز موصول ہو رہی ہیں جن میں ہماری خیریت دریافت کی جا رہی ہے۔ سوشل میڈیا صارفین نے بھی دونوں بہنوں کے اس حوصلے کو خوب سراہا اور موقف اختیار کیا کہ معاشرے میں موجود تمام لڑکیوں کو اتنا ہی با ہمت ہونا چاپئیے تاکہ وہ ظلم اور زیادتی کے خلاف بلا خوف آواز اٹھا سکیں۔
وقت اشاعت : 17/02/2017 - 11:23:39

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں