گلابی سنڈی سے بچائو کیلئے کھیتوںمیں موجود کپاس کی چھڑیوں کو فوری تلف کرنے کی ہدایت ..
تازہ ترین : 1

گلابی سنڈی سے بچائو کیلئے کھیتوںمیں موجود کپاس کی چھڑیوں کو فوری تلف کرنے کی ہدایت

فیصل آباد۔16 نومبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 نومبر2016ء)گلابی سنڈی کے کپاس کی آئندہ فصل پر منتقل ہونے کے خدشات سے بچائو کیلئے جننگ فیکٹریوں کے کچرے اور کھیتوں و سڑکوں کے کنارے پڑی کپاس کی چھڑیوں و ان کھلے ٹینڈوں کو فوری تلف کرنے کی ہدایت کر دی گئی ہے اور کہاگیاہے کہ چونکہ گلابی سنڈی کپاس کی آئندہ فصل پر حملہ آور ہو کر اسے شدید نقصان پہنچا سکتی ہے لہٰذا جننگ فیکٹریوںکے مالکان اور کاشتکاروں کو چاہیے کہ وہ کچرے ، کپاس کی چھڑیوں ، ان کھلے ٹینڈوں کی تلفی میں کسی کوتاہی کا مظاہرہ نہ کریں ۔

محکمہ زراعت کے ذرائع نے بتایاکہ گلابی سنڈی کپاس کے پھولوں، ڈوڈیوں اور ٹینڈوں کا نقصان کر کے نہ صرف پیداوار میں کمی کا سبب بنتی ہے بلکہ اس کی وجہ سے کپاس کی روئی داغدار ہو جاتی ہے اور اس کا معیار بھی گرجاتا ہے۔انہوںنے بتایاکہ یہ سنڈی سردیوں کا موسم دو بیجوں کو جوڑ کر ان کے اندر یا آخری چنائی کے بعد بچ جانے والے ان کھلے ٹینڈوں یا جننگ فیکٹریوں کے کچرا کے اندر گزارتی ہے۔

انہوںنے بتایاکہ کپاس کی بے موسمی اگیتی کاشت کی وجہ سے کپاس کی گلابی سنڈی زیادہ اہمیت اختیار کر گئی ہے جو با آسانی فروری مارچ کی کاشتہ فصل پر منتقل ہو سکتی ہے۔انہوںنے کہا کہ کاشتکار آخری چنائی کے بعد کپاس کے کھیتوں میں بھیڑ بکریاں چرائیںکیونکہ جیسے ہی وہ بچے کھچے ٹینڈے کھائیں گی تو ان میں موجود گلابی سنڈی کی تلفی میں مدد ملے گی۔
وقت اشاعت : 16/11/2016 - 14:15:58

اپنی رائے کا اظہار کریں