ْحکومت نے جیلوں میں معمولی نوعیت کے مقدمات میں ملوث قیدیوں کی رہائی کا سلسلہ شروع ..
تازہ ترین : 1

ْحکومت نے جیلوں میں معمولی نوعیت کے مقدمات میں ملوث قیدیوں کی رہائی کا سلسلہ شروع کر دیا

وزیر اعظم کی ہدایت پرایسے سزا یا فتہ افراد جو جرمانہ ادا نہ کرنے کی وجہ سے دوبارہ سزا بھگت رہے ہیں ان کو آزاد کرنے کیلئے تمام صوبوں کا دورہ کر رہا ہوں وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق کامران مائیکل کی میڈیا سے گفتگو

اسلام آباد۔15نومبر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 15 نومبر2016ء) حکومت نے ملک بھر کی جیلوں میں معمولی نوعیت کے مقدمات میں ملوث قیدیوں کی رہائی کا سلسلہ شروع کر دیا ہے اس سلسلہ میں اسکا آغاز سنٹرل جیل فیصل آباد سے 69 قیدیوں کی رہائی سے شروع کر دیا گیا ہے اس موقع پر وفاقی وزیر برائے انسانی حقوق کامران مائیکل نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ایسے سزا یا فتہ افراد جو کہ جرمانہ ادا نہ کرنے کی وجہ سے دوبارہ سزا بھگت رہے ہیں ان کو آزاد کرنے کے سلسلہ میں وزیر اعظم محمد نواز شریف کی ہدایت کی روشنی میں پاکستان کے تمام صوبوں کا دورہ کر رہا ہوں اس کا آغا آج سنٹرل جیل فیصل آباد سے کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم ان افراد کو دییت کے فنڈز سے رقوم کی اد ا ئیگی سے آزاد کر وائیں گے اس سلسلہ میں 69 قیدیوں کو رہائی دلوادی گئی ہے جو کہ معمولی نوعیت کے مقدمات میں سزا کاٹ رہے تھے انہوں نے کہا کہ ان جیلوں میں قید قیدیوں کی تربیت کے سلسلہ میں تربیتی کورسزکا بھی انعقاد کیا جا رہا ہے تاکہ یہاں سے آزاد ہونے والے قیدی معاشرے میں اپنا مثبت کردار ادا کرسکیں اور اپنے گھر والوں کیلئے راحت کا سامان بھی فراہم کر سکیں۔

انہوں نے کہا کہ جیلوں میں ان کی گنجائش سے زیادہ افراد کو رکھا جا رہا ہے ہم ان کی تعداد کو کم کرنے کے سلسلہ میں ایک جامعہ پالیسی مرتب کر رہے ہیں۔اس موقع پر ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج عابد حسین قریشی کے علاوہ بشپ جوزف ارشد ، سابقہ ایم پی اے جویل عامر سہوترہ ، فادر نثاربرکت، پاسٹر خالد اعوان، ڈائریکٹر جنرل انسانی حقوق محمد ارشد، ریجنل ڈائریکٹر پنجاب انسانی حقوق لبنہ مسعود بھی ہمراہ تھے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 15/11/2016 - 22:03:20

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں