سی پیک کی تکمیل سے ملک معاشی ترقی کے نئے منازل طے کریگا٬مولاناعبدالغفورحیدری ..
تازہ ترین : 1

سی پیک کی تکمیل سے ملک معاشی ترقی کے نئے منازل طے کریگا٬مولاناعبدالغفورحیدری

ایشیاء کا یہ تاریخی منصوبہ پاکستان دشمن قوتوں کوہضم نہیں ہورہا٬بھارت امریکہ یااپنے دیگرہم نوائوں کے اشاروں پرکسی بھی غلطی کامرتکب ہواتواس کاانتہائی تلخ انجام بھی اسے بھگتناہوگا ٬ ڈپٹی چیئرمین سینیٹ

سوراب(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 اکتوبر2016ء)ڈپٹی چیئرمین سینیٹ مولاناعبدالغفورحیدری نے کہاہے کہ سی پیک کی تکمیل سے ملک معاشی ترقی کے نئے منازل طے کرے گا٬ایشیاء کا یہ تاریخی منصوبہ پاکستان دشمن قوتوں کوہضم نہیں ہورہااس لئے مختلف ہتھکنڈوں کاسہارالے رہے ہیں٬عالمی سامراج امریکہ یااپنے دیگرہمنوائوں کے اشاروں پربھارت کسی بھی غلطی کامرتکب ہواتواس کاانتہائی تلخ انجام بھی اسے بھگتناہوگا ٬دنیامیں پاکستان کی اہمیت سے سیخ پاہندوستان نہتے کشمیروں پرغصہ اتاررہاہے مگرباہمت اورحریت پسندکشمیری قوم بھی اس کی اصلیت دنیاپرآشکارکرچکی ہے ٬کشمیروں کی اخلاقی ٬سفارتی اورسیاسی حمایت جاری رکھیں گے دنیاکی کوئی طاقت یاقانون ہمیں مظلوموں کی حمایت سے بازنہیں رکھ سکتا ٬16اکتوبرکوجے یوآئی کے زیراہتمام خضدارمیں منعقدہونے والی امن کانفرنس بلوچستان کی حالات میں بہتری اورلوگوں میںسیاسی شعوروآگاہی کے حوالے سے سنگ میل ثابت ہوگی ان خیالات کااظہارانہوںنے مرکزی جامع مسجدسوراب میں کارکنوں کے اجتماع اورگدرمولی میں مختلف مقامات پرکارنرمیٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے کیا٬درایں اثناء سوراب آمدکے موقع پرکارکنوں نے حاجیکہ کے مقام پرڈپٹی چیئرمین سینیٹ مولاناعبدالغفورحیدری کاوالہانہ استقبال کیااورانہیں جلوس کی صورت میںمرکزی جامع مسجدتک لے آئے٬ تقریبات سے جے یوآئی کے صوبائی سالارحافظ محمدابراہیم لہڑی ٬ضلعی امیرمولانامحمودشاہ ٬تحصیل امیرمولانامحمداسماعیل مولاناخان محمدسناڑی مولانامحمدعیسیٰ مولانامنیراحمدزہری اوردیگرمقررین نے بھی خطاب کیا مولاناعبدالغفورحیدری کاکہناتھاکہ گوادرکاشغراقتصادی راہداری کی بدولت ملک بلخصوص بلوچستان میں معاشی انقلاب آئے گااورترقی کے نئے مواقع میسرہوں گے ٬عالمی سطح پرامریکہ امن نہیں چاہتاپوری دنیامیں اس کی سازشیں چل رہی ہیں سی پیک کوناکام بنانے کے لئے بھی پس پردہ بھارت کواکسارہاہے لیکن مودی کسی غلط فہمی میں نہ رہے اگراپنے آقاکے اشارے پرکوئی غلطی کربیٹھاتوانجام سے دنیاعبرت حاصل کرے گی انہوںنے کہاکہ امریکہ کی کوشش تھی کہ وہ گوادرکاٹھیکہ حاصل کرکے یہاں کسی صورت اپناپنجہ گاڑسکیںلیکن ہم اس کے سامراجی ارادوں کوبخوبی جانتے ہیں کہ یہ دنیاکے کسی بھی حصہ میں ایک بارداخل ہوجائے پھرکبھی نکلنے کانام نہیں لیتاتوملکی سلامتی اوروقارکومدنظررکھتے ہوئے گوادرکاٹھیکہ باقاعدہ ایک معاہدہ کے تحت ہمسایہ ملک چین کودیاگیاجوایک جمہوری اورامن پسندملک ہے جودوستی کے تقاضوں اورمعاہدوں کی پاسداری بھی بخوبی جانتاہے ٬سی پیک کی تکمیل سے پوراملک خصوصابلوچستان کی معاشی صورتحال پرمثبت اثرات مرتب ہوں گے٬البتہ اس حوالے سے روٹ میں آنے والے علاقوں کے مقامی لوگوں کی تحفظات دور کرکے انہیں بھی ترقی کے اس سفرمیں برابرکے شریک کرناہوگا٬جے یوآئی اپنے اس موقف پرسختی سے قائم ہے کہ بلوچستان کے وسائل سے سب سے پہلے یہاںکے مقامی لوگوں کی معیارزندگی بہتربنائی جائے بدقسمتی سے صوبہ کی پسماندگی اورعوام کی بدحالی میں یہاں کے اپنے لوگ بھی برابرکے شریک ہیں ٬ہمارے دورمیں ایم پی اے کافنڈبرائے نام ہوتاتھامگرحلقوں میں کئے جانے والے ترقیاتی آج بھی موجودہیں اورعوام ان سے استفادہ کررہی ہے لیکن اب جبکہ ایک ایم پی اے کوسالانہ کروڑوں روپے مل جاتے ہیںمگرایک بھی قابل ذکراجتماعی منصوبہ نظرآرہا٬جے یوآئی کے منتخب نمائندوں اورقائدین کی وجہ سے ان شاء اللہ کارکنوں کوشرمندگی کاسامنانہیں کرناہوگاء پچیس سال اس نظام کاحصہ رہنے کے باوجودالحمدللہ آج بھی مجھ سمیت جے یوآئی کے دیگرقائدین کے دامن کرپشن سے پاک ہیں اورکوئی بھی ایک پائی ثابت نہیں کرسکتا٬مشرف دورمیں جمہوریت کی بحالی کی جدوجہدسے خائف آمرنے ہمیں دبائومیں لانے کے لئے کوشش کی کہ کرپشن کاکوئی کیس ثابت ہوجائے مگرسوائے مایوسی کے انہیں کچھ ہاتھ نہیں لگا٬جے یوآئی ملک کی واحدسیاسی جماعت ہے جواپنے کاز٬ترجیحات اورعوام کے حقوق کے لئے بلاتعطل نمایاں جدوجہدکی ہے کبھی بھی اپنے مشن پرسمجھوتہ نہیں کی ٬ہم دعوای سے کہتے ہیں کہ اگربلوچستان کی صوبائی حکومت جے یوآئی کے حوالے کی جائے تواس پسماندہ صوبہ کوبھی ترقی میں پنجا ب کے برابرکھڑاکردیں گے ٬عوام اپنے حقوق کی جنگ میں جے یوآئی کاہاتھ مضبوط کریں انہیں یقین دلاتے ہیں انہیں موجودہ مایوسیوں اورمحرومیوں سے نجات دلائیں گے ٬16اکتوبرکوجے یوآئی کے زیراہتمام خضدارمیں منعقدہونے والی امن کانفرنس بلوچستان کی حالات میں بہتری اورلوگوں میںشعوروآگاہی کے حوالے سے سنگ میل ثابت ہوگی ٬اس حوالے سے کارکنوں پربھاری زمہ داری عائدہوتی ہے کہ وہ اپنی تمام ترصلاحیتوں کواس تاریخی کانفرنس کی کامیابی کے لئے بروئے کارلائیں٬مولاناعبدالغفورحیدری نے اپنے دورہ سوراب کے موقع پرگدرمیں زمین کے تنازعے پر پرمحمدحسنی قبیلہ کے قتل ہونے والے افرادکے دونوں فریقین کے لواحقین کے پاس گئے فاتحہ خوانی کی اوران سے تحمل ٬درگزرسے تنازع ختم کرنے اورآپس میں صلح کی بھی اپیل کی اس موقع پر سادات علماء کرام اورقبائلی عمائدین بھی کثیرتعدادمیں ان کے ہمراہ تھے ٬ڈپٹی چیئرمین سینٹ مولاناعبدالغفورحیدری نے نواحی علاقہ مولی میں جے یوآئی کے مقامی امیرمولانامحمدعظیم لہڑی کی والدہ اورمرحوم حافظ محمدبخش کی اہلیہ کے انتقال پربھی تعزیت اورفاتحہ خوانی کی ۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 11/10/2016 - 16:51:33

اس خبر پر آپ کی رائے‎