قومی اسمبلی میں حکومت کو ایک بار پھر کورم ٹوٹنے کی وجہ سے خفت اور شرمندگی کا سامنا ..
تازہ ترین : 1

قومی اسمبلی میں حکومت کو ایک بار پھر کورم ٹوٹنے کی وجہ سے خفت اور شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 اگست ۔2016ء) قومی اسمبلی میں حکومت کو جمعہ کو ایک بار پھر کورم ٹوٹنے کی وجہ سے خفت اور شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا‘ وقفہ سوالات بھی مکمل نہ ہوسکا‘ آدھ گھنٹے کے وقفے کے بعد بھی کورم پور انہ ہوسکا تو ڈپٹی سپیکر مرتضیٰ جاوید عباسی نے اجلاس پیر کی شام تک ملتوی کردیا۔ جمعہ کو قومی اسمبلی کا اجلاس پانچ منٹ کی تاخیر سے ڈپٹی سپیکر کی زیر صدارت 10:35 پر تلاوت قرآن پاک سے شروع ہوا ۔

ڈپٹی سپیکر نے وقفہ سوالات شروع کرایا۔ ارکان کی تعداد اجلاس کے آغاز میں ہی کم تھی تاہم بیس منٹ کی کارروائی کے بعد 10:56 پر پی ٹی آئی کی مسرت احمد زیب نے کورم کی نشاندہی کردی جس پر سپیکر نے گنتی کرائے بغیر ہی اجلاس کورم پورا ہونے تک ملتوی کرادیا۔ آدھ گھنٹے سے زائد کے تعطل کے بعد 11:36 پر اجلاس دوبارہ شروع ہوا تو سپیکر نے ارکان کی گنتی کرانے کے احکامات دیئے گنتی کے دوران ارکان کی تعداد پوری نہ نکلی جس پر ڈپٹی سپیکر نے اجلاس پیر کی شام پانچ تک تک ملتوی کردیا۔
وقت اشاعت : 12/08/2016 - 15:18:55

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں