ہائیکورٹ نے پسند کی شادی کرنیوالی لڑکی کو خاوند کے ساتھ جانے کی اجازت دیدی ، اغواء ..
تازہ ترین : 1

ہائیکورٹ نے پسند کی شادی کرنیوالی لڑکی کو خاوند کے ساتھ جانے کی اجازت دیدی ، اغواء کا مقدمہ خارج کرنے کا حکم

لاہور ( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔11 اگست ۔2016ء ) لاہور ہائیکورٹ نے پسند کی شادی کرنے والی لڑکی کو خاوند کے ساتھ جانے کی اجازت دیتے ہوئے پولیس کو درج مقدمہ خارج کرنے کا حکم دیدیا۔گزشتہ روز لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس مظہر اقبال سدھو نے کیس کی سماعت شروع کی تو لو میرج کرنے والی لڑکی نے عدالت کو بتایا کہ اس نے مذہب تبدیل کر کے عمران سے شادی کر لی ہے،اسے عمران نے اغوا ء نہیں کیا،میرے والدین نے عمران کے خلاف اغوا ء کا جھوٹا مقدمہ درج کروایا ہے،مجھے خاوند کے ساتھ جانے کی اجازت دی جائے۔

عدالت نے لڑکی کو خاوند کے ساتھ جانے کی اجازت دیتے ہوئے پولیس کو درج مقدمہ خارج کرنے کا حکم دے دیا۔کمرہ عدالت سے باہر آنے پر لڑکی کی والدہ نے اسے زبردستی اپنے ساتھ لے جانے کی کوشش کی جس پر سکیورٹی اہلکاروں نے اسے آزادی دلا کے خاوند کے ساتھ بھیج دیا۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 11/08/2016 - 18:06:17

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں