بھارتی سیاسی جماعتوں کا کرفیو اور نہتے کشمیریوں پر قابض فوج کی جانب سے چھرا بندوق ..
تازہ ترین : 1

بھارتی سیاسی جماعتوں کا کرفیو اور نہتے کشمیریوں پر قابض فوج کی جانب سے چھرا بندوق کے استعمال پر پابندی لگانے کا مطالبہ

مقبوضہ وادی کی کٹھ پتلی حکومت کے پاس مسائل حل کرنے کے لئے افرادی قوت ہی نہیں ٗغلام نبی آزاد

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔10 اگست ۔2016ء) بھارتی اہم سیاسی جماعتوں نے بھی مقبوضہ وادی میں 34 روز سے جاری کرفیو اور نہتے کشمیریوں پر قابض فوج کی جانب سے چھرا بندوق کے استعمال پر پابندی لگانے کا مطالبہ کردیا ہے۔گزشتہ 33 روز سے کرفیو اور احتجاجی مظاہروں کے دوران قابض فوج کے ہاتھوں جام شہادت نوش کرنے والے کشمیریوں کی تعداد 80 سے تجاوز کرگئی ہے، اس کے علاوہ بھارت کے قابض بھارتی فوج کی جانب سے جانوروں کے شکار کے لیے استعمال ہونے والی چھرا بندوقوں نے سیکڑوں نوجوانوں کو بصارت سے محروم کردیا وادی میں انٹر نیٹ اور موبائل فون کی سہولت معطل ہے تاہم اس کے باوجود معروف کشمیری حریت پسند برہان وانی کی شہادت اور اس نتیجے میں کشمیری عوام کے پر امن احتجاج نے عالمی میڈیا کے بعد اب بھارتی سیاستدانوں بھی جھنجھوڑ ڈالا ہے اور اب اس کی بازگشت 70 برس سے کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ ہے کا راگ الاپنے والے ایوانوں تک جاپہنچی ۔

بھارتی ایوان بالا راجیہ سبھا کے اجلاس کے دوران اپوزیشن جماعتوں نے مودی سرکار پر کْھل کر تنقید کی۔ راجیہ سبھا میں قائد حزب اختلاف اور کانگریس پارٹی کے رہنما غلام نبی آزاد کا کہنا تھا کہ وہ بھارت میں حکومت کرنے والی کسی بھی جماعت کو مقبوضہ کشمیر کی صورت حال کا ذمہ دار قرار نہیں دیتے۔ مقبوضہ وادی کی کٹھ پتلی حکومت کے پاس مسائل حل کرنے کے لئے افرادی قوت ہی نہیں، مقبوضہ وادی میں بے گناہ خواتین اور بچے مررہے ہیں، حکومت کی ہدایات کے باوجود فوج چھرا بندوقوں کا استعمال کررہی ہے۔

مقبوضہ کشمیر کی کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی پارٹی پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی سے تعلق رکھنے والے نذیر احمدنے کہاکہ کشمیر کا مسئلہ حل ہونے میں اب جتنا وقت لگے گا یہ مزید پیچیدہ ہوتا جائے گا، وادی کے عوام بندوقوں کے لیے نہیں لیکن انہیں ہم پر بھروسہ نہیں۔کمیونسٹ پارٹی مارکسسٹ کے ستیہ رام یوچوری کا کہنا تھا کہ کشمیر میں خون پھیلاہوا ہے اور اس کی بو سونگھ کر وہاں صرف گدھ ہی اترتے ہیں، کشمیر کو غداری کے طعنے دیئے گئے جس کے بعد وہاں کے لوگوں کا بھارت پر سے اعتماد اٹھ گیا ہے ۔

جنتا دل یونائیٹڈ کے شرد یادیو نے کہا کہ اب وقت تبدیل ہوگیا ہے۔ ہم پاکستان سے کسی جنگ کے متحمل نہیں ہوسکتے لہٰذا ہمیں کشمیریوں کا دل محبت سے جیتنا ہوگا۔ترنمول کانگریس کے ڈیرک اوبرائن نے اکھنڈ بھارت کا نعرہ لگانے والوں کے سامنے یہ اعتراف کرلیا کہ بھارتی فوج کی جانب سے طاقت کا استعمال ان کے اپنے حق میں نہیں۔ انہوں نے کہا کہ برہان وانی جب زندہ تھا تو وہ بھارت کے لیے انتہائی انتہائی خطرناک تھا لیکن اب جب بھارتی فوج نے اسے قتل کردیا ہے تو وہ اور بھی خطرناک ہوگیا ہے۔

وقت اشاعت : 10/08/2016 - 21:58:14

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں