تھرپارکرمیں مفت ایمبولنس سروس ختم کر دی گئی‘ بچوں کی اموات کی شرح میں تشویشناک ..
تازہ ترین : 1
تھرپارکرمیں مفت ایمبولنس سروس ختم کر دی گئی‘ بچوں کی اموات کی شرح میں ..

تھرپارکرمیں مفت ایمبولنس سروس ختم کر دی گئی‘ بچوں کی اموات کی شرح میں تشویشناک اضافہ

مٹھی (ا ردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔18مارچ۔2016ء)تھرپارکرمنتقلی کی مفت ایمبولنس سروس اچانک ختم کر دی گئی ہے ،جس سے مریض بچوں کی اموات کی شرح میں بھی تشویشناک اضافہ ہو گیا ہے۔صحرائے تھر میں بھوک پیاس اور غربت و افلاس کے مارے مکینوں کے لئے غذائیت کی کمی اور دیگر امراض میں مبتلا اپنے بچوں کو تشویشناک حالت میں بڑے شہروں کے سرکاری ہسپتالوں میں منتقلی کی مفت ایمبولنس سروس ختم کر دی گئی ہے، جس کے بعد تھر میں گزشتہ 2 روز کے دوران بچوں کی اموات میں بھی اضافہ ہو گیا ہے۔

سول ہسپتال مٹھی کے ریکارڈ کے مطابق جنوری میں 72بچوں کو حیدرآباد اور کراچی کے ہسپتالوں میں علاج کے لئے منتقل کیا گیا ،فروری میں یہ تعداد 51تھی اور مارچ کے ابتدائی15 دنوں میں 35بچے علاج کیلئے ایمبولنسوں کے ذریعے منتقل کئے گئے۔ کچھ روز سے یہ سروس ختم کر دی گئی ہے، ہسپتال انتظامیہ کا کہنا ہے کہ پٹرول کی مد میں فنڈز ختم ہو گئے ہیں جس کے باعث مفت ایمبولنس سروس ختم کی گئی ہے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 18/03/2016 - 13:36:17

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں