افغانستان میں پاکستان مخالف جذبات ابھارے جارہے ہیں ‘ بخوبی آگاہ ہیں ‘پاکستان ..
تازہ ترین : 1

افغانستان میں پاکستان مخالف جذبات ابھارے جارہے ہیں ‘ بخوبی آگاہ ہیں ‘پاکستان

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔17 مارچ۔2016ء)پاکستان نے آزاد کشمیر میں چینی افواج کی موجودگی کی سختی سے تردید کرتے ہوئے کہاہے کہ مسئلہ کشمیر کو پوری دنیا تسلیم کرتی ہے ‘حل اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق نکالنا چاہیے ‘امیدہے پاکستانی سفارتکاروں کو پاک بھارت میچ دیکھنے کی اجازت نہ دینے کا معاملہ جلد حل ہو جائیگا ‘افغانستان میں پاکستان مخالف جذبات ابھارے جارہے ہیں اور ہم اس سے بخوبی آگاہ ہیں۔

قیام امن کیلئے افغان حکومت طالبان گروپ کا مذاکرات کی میز پر آنا ضروری ہے۔ جمعرات کو ہفتہ وار بریفنگ دیتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ نفیس ذکریا نے بتایا کہ پاکستانی سفارتکاروں کو پاک بھارت میچ دیکھنے کی اجازت نہ دینے سے متعلق تازہ اطلاع نہیں ‘ بھارت سے اپنی مایوسی کا اظہار کیا امید ہے معاملہ جلد حل ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مشیر خارجہ سرتاج عزیز بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج سے ملاقات میں سارک سربراہان کانفرنس میں شرکت کیلئے نریندر مودی کو دعوت نامہ دیں گے تاہم نیو کلیئر سمٹ میں نواز مودی ملاقات سے متعلق ابھی کچھ نہیں کہہ سکتا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے آزاد کشمیر میں چینی افواج کی موجودگی کی اطلاعات کی سختی سے تردید کرتے ہوئے کہا کہ امریکی میڈیا رپورٹس پر تبصرہ نہیں کروں گا۔ مسئلہ کشمیر کو پوری دنیا تسلیم کرتی ہے اس کا حل اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق نکالنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان گزشتہ 3 دہائیوں سے حالت جنگ میں ہے ‘افغانستان کے ساتھ اشتراک عمل اور مذاکرات کے میکنزم موجود ہیں جس کے تحت طالبان کی پناہ گاہوں سمیت تمام معاملات پر بات چیت جاری ہے۔

پاکستان اور خطے سے دہشتگردی کا مکمل خاتمہ چاہتے ہیں لیکن قیام امن کیلئے افغان حکومت وہاں کے تمام طالبان گروپ کا مذاکرات کی میز پر آنا ضروری ہے۔انہوں نے واضح کیا کہ پاکستان ، افغانستان ، چین اور امریکہ پر مشتمل چار فریقی گروپ فریقین کو مذاکرات کی میز پر لانے کیلئے اپنے طور پر بھرپور کوششیں کر رہا ہے ‘افغانستان میں امن چاہتے ہیں جس کے لیے مثبت کردار ادا کرتے رہیں گے تاہم الزام تراشیوں پر یقین نہیں رکھتے ‘ افغانستان میں پاکستان مخالف جذبات ابھارے جارہے ہیں اور ہم اس سے بخوبی آگاہ ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ایرانی صدر کے دورہ پاکستان کی حتمی تاریخ بھی طے نہیں ہوئی۔ترجمان دفترخارجہ نے کہا کہ پاکستان دہشت گردی کے مکمل خاتمے کے لئے پرعزم ہے ‘ خطے میں امن کے لئے پاکستان کی کوششیں دنیا کے سامنے ہیں۔دفترخارجہ نے پشاورمیں سرکاری ملازمین کی بس میں دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پشاورحملے میں جانوں کے ضیاع پر افسوس ہے۔ نفیس ذکریا نے کہاکہ پاک سعودی عرب تعلقات بہت مضبوط ہیں، سعودی عرب دو طرفہ تعلقات پر بات کرنے سے قاصر ہوں ۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 17/03/2016 - 16:15:28

متعلقہ عنوان :

اپنی رائے کا اظہار کریں