وفاقی دارلحکومت،پنجاب اور خیبر پختونخوا میں موسلادھار بارشوں کا سلسلہ مسلسل ..
تازہ ترین : 1

وفاقی دارلحکومت،پنجاب اور خیبر پختونخوا میں موسلادھار بارشوں کا سلسلہ مسلسل تیسرے روز بھی جاری رہا، مکانات کی چھتیں گرنے سمیت مختلف حادثات میں درجنوں افراد جاں بحق ،100کے قریب زخمی،سینکڑوں مکان متاثر ،این ڈی ایم اے نے31 ہلاکتوں کی تصدیق کردی،شدید بارشوں سے ندی نالوں میں طغیانی ، نشیبی علاقے زیر آب آگئے،کئی علاقوں میں لینڈ سلائیڈنگ سے شاہراہیں بند،ملکہ کوہسار کے پہاڑوں پر برف باری کی پیش گوئی ، سیاحوں کا رش لگ گیا، ڈیموں میں پانی کی سطح انتہائی بلند ہوگئی،راول ڈیم کے سپل وے کھول دیئے گئے،جڑواں شہروں کے نشیبی علاقے بھی زیرآب آگئے،بے نظیر بھٹو انٹر نیشنل ایئرپورٹ پر فلائٹ آپریشن بری طرح متاثر

اسلام آباد/لاہور/پشاور/کوئٹہ/کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13مارچ۔2016ء)وفاقی دارلحکومت،پنجاب اور خیبر پختونخوا میں موسلادھار بارشوں کا سلسلہ مسلسل تیسرے روز بھی جاری رہا، شدید بارشوں سے مکانات کی چھتیں گرنے سمیت مختلف حادثات میں درجنوں افراد جانجق،100کے قریب زخمی اورسینکڑوں مکان متاثر ہوئے، نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی(این ڈی ایم اے) نے31 ہلاکتوں کی تصدیق کردی،شدید بارشوں سے ندی نالوں میں طغیانی جبکہ نشیبی علاقے زیر آب آگئے،کئی علاقوں میں لینڈ سلائیڈنگ سے شاہراہیں بند،ملکہ کوہسار کے پہاڑوں پر برف باری کی پیش گوئی پر سیاحوں کا رش لگ گیا،بارشوں سے ڈیموں میں بھی پانی کی سطح انتہائی بلند ہوگئی،بارش کے باعث راول ڈیم کے سپل وے بھی کھول دیئے گئے،ڈیم میں پانی کی سطح1750فٹ برقراررکھنے کے لئے1700کیوسک فٹ پانی کا اخراج کیا جارہاہے،جڑواں شہروں کے نشیبی علاقے بھی زیرآب آگئے،بے نظیر بھٹو انٹر نیشنل ایئرپورٹ پر فلائٹ آپریشن بری طرح متاثر، خراب موسم کے باعث اسلام آباد ایئرپورٹ پر 35 سے زائد اندرون و بیرون ممالک کی پرواز یں تاخیر کا شکار ہوگئیں،ملک بھر میں سیلاب سے نمٹنے کے لئے متعلقہ اداروں کو الرٹ کردیاگیا،محکمہ موسمیات نے (کل)پیر سے بارشوں کا حالیہ سسٹم ختم ہونے کی نوید سنادی۔

تفصیلات کے مطابق جڑواں شہروں سمیت پنجاب اورخیبر پختونخوا میں شدید بارشوں کا سلسلہ مسلسل تیسرے روز بھی جاری رہا جبکہ پہاڑوں پر برف باری بھی ہوئی،ملک بھر میں شدید بارشوں کے باعث مکانات کی چھتیں گرنے کے واقعات میں درجنوں افراد جانجق،100کے قریب زخمی اورسینکڑوں مکان متاثر ہوئے، نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی(این ڈی ایم اے) نے31 ہلاکتوں کی تصدیق کردی۔

ترجمان این ڈی ایم اے کے مطابق حالیہ بارشوں سے ملک بھر میں جانبحق افرادکی تعداد31ہوگئی،بارشوں کی وجہ سے37افراد زخمی جبکہ53گھر متاثر ہوئے،تمام ہلاکتیں مکانات گرنے کی وجہ سے ہوئیں۔میڈیا رپورٹس کے مطابق شدید بارشوں سے اتوار کے روز گوجرخان میں مکان کی چھت گرنے سے ایک ہی خاندان کے تین افراد جانجق ہوگئے جن میں2بچے اور ایک عورت شامل تھی۔

وزیراعلی پنجاب شہبازشریف نے گوجرخان میں انسانی جانوں کے ضیاع پر دکھ اورافسوس کا اظہارکیا،محمند ایجنسی میں بارش کے باعث مکان کی چھت گرنے سے ایک شخص ہلاک جبکہ تین زخمی ہوئے،بنوں میں مکان کی چھت گرنے سے 2 بھائی جاں بحق جب کہ بٹ خیلہ کے علاقے سخا کوٹ میں مکان کی چھت گرنے سے ایک شخص جاں بحق ہوا، مردان کے علاقہ تخت بھائی میں مکان کی چھت گرنے سے بچی جاں بحق جب کہ میاں بیوی زخمی ہوئے۔

فاٹا اور خیبر پختون خوا میں مکانات کی چھتیں گرنے سے اب تک 13 افراد جاں بحق اور 20 سے زائد زخمی ہو چکے ہیں۔پشاور میں شدید بارش کے باعث حاجی کیمپ، رنگ روڈ، جمیل چوک اور ملحقہ علاقوں میں کئی فٹ تک پانی جمع ہو گیا ہے جس کی وجہ سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔سوات میں 3 روز سے شہری علاقوں میں بارش اور پہاڑوں پر برفباری کا سلسلہ جاری ہے، مالم جبہ میں اب تک مالم جبہ میں ایک فٹ جب کہ ماہو ڈھنڈ اور گبرال میں 2 فٹ تک برف پڑ چکی ہے۔

پنجاب میں بھی شدید بارشوں کے متعدد مکانات کی چھتیں گرنے کے واقعات رونما ہوئے۔ گوجرخان کے علاقے بنگالی شریف میں ریلوے پھاٹک کے قری مکان کی چھت گرنے سے موجود ماں اور 2 بچے ملبے تلے دب کر جاں بحق جب کہ 3 زخمی ہو گئے۔ فیصل آباد میں جی پی او کے قریب مکان کی چھت گرنے سے ایک شخص زخمی ہو گیا۔جڑواں شہروں میں بھی شدید بارش کے باعث بے نظیر بھٹو انٹر نیشنل ایئرپورٹ پر فلائٹ آپریشن بری طرح متاثر ہوا ہے۔

خراب موسم کے باعث اسلام آباد ایئرپورٹ پر 23 سے زائد اندرون و بیرون ممالک کی پرواز یں تاخیر کا شکار ہیں۔ ایئرپورٹ انکوائری حکام کا کہنا ہے کہ مسافر ایئرپورٹ آنے سے قبل پرواز سے متعلق معلومات حاصل کر لیں۔جہلم میں پنڈ دادن خان روڈ مشری موڑ سے شاہ کبیرتک گزشتہ 4 روز سے بند ہے جب کہ شدید بارش کے باعث سڑک کی مرمت کا کام تاحال شروع نہیں کیا جا سکا جس کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

شدید بارش کے باعث مظفرآباد کو پاکستان سے ملانے والی دونوں شاہرائیں ٹریفک کیلئے بند ہو گئی ہیں۔ مظفرآباد ایبٹ آباد روڈ لوہار گلی کے مقام پرمٹی کے تودے گرنے سے بند ہو گیا ہے جب کہ مظفرآباد نیلم روڈ کئی مقامات سے لینڈ سلائیڈنگ کے باعث بند ہوگئی۔ راولپنڈی روڈ بھی کوہالہ کے قریب لینڈ سلائیڈنگ کے باعث بند ہوگئی ہے۔دوسری طرفملکہ کوہسار کے پہاڑوں پر برف باری کی پیش گوئی پر سیاحوں کا رش لگ گیا،بارشوں سے ڈیموں میں بھی پانی کی سطح انتہائی بلند ہوگئی،بارش کے باعث راول ڈیم کے سپل وے بھی کھول دیئے گئے،ڈیم میں پانی کی سطح1750فٹ برقراررکھنے کے لئے1700کیوسک فٹ پانی کا اخراج کیا جارہاہے۔

محکمہ موسمیات کا مطابق ملک کے بالائی علاقوں میں بادل چھائے ہوئے ہیں، آئندہ 24 گھنٹے کے دوران کشمیر، اسلام آباد، بالائی پنجاب، بالائی خیبرپختونخواہ اور فاٹا میں بارش کا امکان ہے، گلگت بلتستان میں چند مقامات پر تیز ہواوٴں اور گرج چمک کے ساتھ مزید بارش کا امکان ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق ہزارہ ڈویڑن اور خطہ پوٹھوار میں چند مقامات پر ژالہ باری کا بھی امکان ہے، شدید بارشوں کے باعث کشمیر، ہزارہ ڈویڑن میں لینڈ سلائڈنگ جب کہ بالائی خیبرپختونخواہ، فاٹا، راولپنڈی، گوجرانوالہ اور لاہور کے نشیبی علاقے زیر آب آنے کا خدشہ ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں راولاکوٹ میں85، خیبر چراٹ میں80، مالم جبہ میں 78، مظفر آباد میں 50، اسلام آباد میں 75، راولپنڈی میں 60، سرگودھا میں 48، مری میں 50 ملی میٹر ریکارڈ کی گئی۔

وقت اشاعت : 13/03/2016 - 18:39:09

اپنی رائے کا اظہار کریں