اسرائیلی حکومت کا بیت المقدس میں یہودیوں کیلئے 900 نئے گھرتعمیر کرنے کا اعلان
تازہ ترین : 1

اسرائیلی حکومت کا بیت المقدس میں یہودیوں کیلئے 900 نئے گھرتعمیر کرنے کا اعلان

مقبوضہ بیت المقدس(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔13 نومبر۔2015ء )اسرائیلی حکومت نے مقبوضہ بیت المقدس میں قائم یہودی کالونی میں مزید 900 مکان تعمیر کرنے کا اعلان کردیا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق صہیونی حکومت کی طرف سے یہ اعلان ایک ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو امریکہ کے دورے پرہیں۔ایک ہزار کے قریب مکانات کی تعمیر کا یہ اعلان امریکا کیلئے بھی اسرائیل کی طرف سے واضح پیغام ہے۔

مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق گیلو کالونی میں نوسو مکانات کی تعمیر کا فیصلہ پہلے کیا گیا تھامگر اس پر مزید بحث کے لیے اسے موخر کردیا گیا تھا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق بیت المقدس میں اسرائیلی بلدیہ کے زیرانتظام پلاننگ و ہاؤسنگ کمیٹی نے جنوب مغربی بیت المقدس میں 900 مکانات کی تعمیرشروع کرنے کے لیے تمام انتظامات مکمل کرلیے ہیں۔ بلدیہ کی جانب سے حتمی منظوری کے بعد گھروں کی تعمیر کے لیے اراضی کی نشاندہی کی جائے گی جس کے بعد وہاں پرتعمیراتی کام شروع کیا جائے گا۔

نئے تعمیراتی پروجیکٹ کیلئے زیریں جنوبی گیلو کا نام دیا گیا ہے ۔قبل ازیں2013 میں اسرائیلی حکومت نے گیلو کالونی میں یہودی آباد کاروں کے گھر تعمیر کرنے کے لیے ایک نیا نقشہ جاری کیا تھا تاہم اس پرعمل درآمد کیلئے کچھ عرصہ کام روک دیا گیا تھا۔

وقت اشاعت : 13/11/2015 - 15:18:08

اپنی رائے کا اظہار کریں