(ن) لیگ کے جہانگیر خانزادہ ، پی ٹی آئی کے شعیب صدیقی نے اسمبلی رکنیت کا حلف اٹھالیا
تازہ ترین : 1

(ن) لیگ کے جہانگیر خانزادہ ، پی ٹی آئی کے شعیب صدیقی نے اسمبلی رکنیت کا حلف اٹھالیا

میری کامیابی سے عمران خان کے 126 روز کے دھرنے کو تقویت ملتی ہے ، شعیب صدیقی کا ایوان میں اظہار خیال

لاہور( اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔12 نومبر۔2015ء)پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں ضمنی انتخاب میں منتخب ہونے والے دو اراکین نے رکنیت کا حلف اٹھا لیا ۔ اسپیکر پنجاب اسمبلی رانا محمد اقبال نے پی پی 16 سے نو منتخب رکن (ن) لیگ کے جہانگیر خانزادہ اور پی پی 147سے پی ٹی آئی کے شعیب صدیقی سے حلف لیا ۔ اسپیکر پنجاب اسمبلی نے اپنے اور ایو ان کی طرف سے دونوں اراکین اسمبلی کو مبارکباد دی ، شعیب صدیقی کی طرف سے دھاندلی کا ذکر کرنے پر حکومتی بنچوں سے جھوٹے جھوٹے کے نعرے لگائے جاتے رہے ۔

جہانگیر خانزادہ نے ایوان میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ میں مسلم لیگ (ن) کی قیادت کا شکر گزار ہوں جنہوں نے مجھے عوام اور پاکستان کی خدمت کے لئے اتنا بڑا پلیٹ فارم مہیا کیا ۔ میں تمام سیاسی جماعتوں کابھی مشکور ہوں جنہوں نے میرے شہید والد کی خدمات کے اعتراف میں میرے مد مقابل اپنے امیدوار کھڑے نہیں کئے جو اس بات کا ثبوت ہے کہ سیاسی اختلافات ایک طرف قوم کی سلامتی کے لئے ہم سب ایک ہیں ۔

میں اپنے حلقے کی عوام کا بھی شکر گزار ہوں جنہوں نے مشکل وقت میں میرا ساتھ دیا اور شہدائے شادی خیل کے خون کے ساتھ وفا کی ۔ میرے والد نے 25سال یونیفارم میں ملک وقوم کی خدمت کی اور ریٹائرمنٹ کے بعد انہوں نے سیاست میں رہ کر ملک و قوم کی خدمت کا فریضہ سر انجام دیا ۔ انہوں نے نئی نسل کوپیغام دیا کہ اگر قربان ہونا ہے تو اپنے ملک اور قوم پر قربان ہوا جائے ۔

میری پنجاب سے حکومت سے اپیل ہو گی کہ ان کے اپنے حلقے میں ترقیاتی منصوبوں کے حوالے سے جو سپنے ادھورے رہ گئے ہیں انہیں پورا کیا جائے ۔ شعیب صدیقی نے ایوان میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ میری کامیابی سے عمران خان کے اس وژن کو تقویت ملتی ہے جسکے تحت پی ٹی آئی نے 126روز تک دھرنا دیا اور یہ ثابت ہوا کہ عام انتخابات میں نتائج پر شب خون مارا گیا اور پھر ہمیں عدالت سے انصاف ملا ۔

اس دوران حکومتی بنچوں پر بیٹھے ہوئے اراکین جھوٹے جھوٹے کے نعرے لگاتے رہے اور اسپیکر انہیں اس سے روکتے رہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں حکومت کے ان اراکین اسمبلی کا بھی شکر گزار ہوں جنہوں نے انتخابی مہم میں حصہ نہیں لیا اور ان کا موقف تھاکہ حکمرانوں کے گردنوں ں سے سریا باہر نکلے تاکہ انکی بھی عزت بحال ہو ۔ بعدا زاں رانا ثنا اﷲ خان نے بھی دونوں اراکین کو حکومت کی طرف سے مبارکباد دی ۔

وقت اشاعت : 12/11/2015 - 21:12:19

اپنی رائے کا اظہار کریں